چین کا کورونا وائرس کے کیسز میں کمی کے بعد سنیما گھرکھولنے کا اعلان

ویب ڈیسک  جمعرات 16 جولائ 2020
چین میں کورونا وائرس کی روک تھام کے لیے عائد کیے گئے لاک ڈاؤن کے باعث گزشتہ چھ ماہ سے سنیما گھر بند تھے۔ (تٓصویر: اے ایف پی)

چین میں کورونا وائرس کی روک تھام کے لیے عائد کیے گئے لاک ڈاؤن کے باعث گزشتہ چھ ماہ سے سنیما گھر بند تھے۔ (تٓصویر: اے ایف پی)

بیجنگ: چین نے کورونا وائرس کی روک تھام کے لیے گزشتہ چھ ماہ سے بند سنیما گھر کھولنے کی اجازت دے دی ہے۔

عالمی خبر رساں ادارے کے مطابق چینی حکومت کی فلم سے متعلق امور کی انتظامیہ نے جمعرات کو ایسے علاقوں میں سنیما گھر کھولنے کی اجازت دینے کا اعلان کیا ہے جہاں وبا کے پھیلاؤ کا خدشہ کم ہوچکا ہے۔ ان علاقوں میں 20 جولائی سے سنیما کھول دیے جائیں گے۔ تاہم جن علاقوں میں کورونا وبا سے متعلق  متوسط یا انتہائی درجے کے خدشات ہیں ان میں سنیما گھر بدستور بند رہیں گے۔

تفصیلات کے مطابق سنیما گھروں کو حکومتی قواعد و ضوابط پر لازمی عمل کرنا ہوگا ۔ سنیما آنے والوں کے لیے چہرے پر ماسک پہننا لازم ہوگا۔ سنیما حال میں صرف 30 فی صد نشستیں ہی پُر کرنے کی اجازت ہوگی جس کے لیے پیشگی بکنگ کروانا ہوگی اور فلم بینوں کو اپنے ہمراہ کھانے پینے کی اشیا لانے کی اجازت بھی نہیں ہوگی۔

واضح رہے کہ چین نے مارچ سے کورونا وائرس کے متاثرین کی تعداد میں تیزی سے کمی آنے کے بعد لاک ڈاؤن کی پابندیوں میں نرمی کا آغاز کردیا تھا جس کے بعد زیادہ تر ریستوران، شاپنگ مالز اور کلب بھی کھولنا شروع کردیے تھے۔ چین دنیا کی دوسری فلم مارکیٹ ہے اور کورونا وبا کے باعث عائد کی گئی پابندیوں کے نتیجے میں سنیما مالکان اور فلم سازوں کو بھاری مالی نقصان اٹھانا پڑا ہے۔ سنیما کھولنے کے حکومتی فیصلے کو چینی فلمی شائقین اور سنیما مالکان  و فلم ساز حلقوں نے سراہا ہے۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔