کورونا وبا، سماجی روایات دم توڑ گئیں،سیاسی بیٹھکیں ویران

قیصر شیرازی  بدھ 22 جولائ 2020
سیاسی رہنماؤں کی جنازوں میں شرکت انتہائی کم، قل،چہلم کی رسومات بھی محدود۔ فوٹو: فائل

سیاسی رہنماؤں کی جنازوں میں شرکت انتہائی کم، قل،چہلم کی رسومات بھی محدود۔ فوٹو: فائل

راولپنڈی: کورونا وائرس اور لاک ڈاؤن نے شہر بھر کی سماجی سرگرمیاں مکمل طور پر مفلوج کر رکھ دیں۔

کورونا وائرس کے باعث نماز جنازہ اور جنازہ کے ساتھ مرحوم کے گھر سے قبرستان تک جانے کی سماجی روایت دم توڑتی جارہی ہے،کورونا سے قبل پورا محلہ اور مقامی بازار جنازہ کے ساتھ شریک ہوتا اور نماز جنازہ بھی اداکرتے تھے۔ اب یہ تعداد سینکڑوں سے کم ہوکر درجنوں تک آگئی ہے۔

شہر میں ایسے جنازے بھی دیکھے ہیں جس میں خاندان اور پڑوسی شریک تھے ۔کورونا کے باعث سیاسی کارکنوں سیاسی رہنماؤں نے بھی جنازوں میں شریک ہونا انتہائی کم کر دیا ہے۔ کئی جنازوں میں سیاست دان منتخب نمائندے صرف نماز جنازہ کے وقت گاڑی پر پہنچتے ہیں اور جنازہ پڑھتے ہی لوٹ جاتے ہیں۔ قل،چہلم کی رسومات بھی محدود ہوگئی ہیں۔

شہر بھر میں شادی،نکاح کی تقریبات میں بھی شہریوں کی شرکت میں ریکارڈ کمی ہوگئی۔

 

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔