بھارت ؛ قرنطینہ سینٹر میں کورنا کے مریض کی ساتھی مریضہ کیساتھ جنسی زیادتی

ویب ڈیسک  ہفتہ 25 جولائ 2020
دونوں کورونا کے مریض تھے اور آئسولیشن وارڈ میں زیر علاج تھے، فوٹو : فائل

دونوں کورونا کے مریض تھے اور آئسولیشن وارڈ میں زیر علاج تھے، فوٹو : فائل

نئی دہلی: بھارت میں کورونا وارڈ میں زیر علاج 19 سالہ نوجوان نے 14 سالہ مریضہ کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا۔

امریکی نشریاتی ادارے سی این این کے مطابق بھارتی دارالحکومت نئی دہلی کے سردار پٹیل اسپتال کے کورونا وارڈ میں 19 سالہ نوجوان نے 14 سالہ لڑکی کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا جب کہ لڑکے کا ایک 20 سالہ دوست مکروہ فعل کی ویڈیو بناتا رہا۔

لڑکی کے اہل خانہ نے پولیس میں مقدمہ درج کرایا جس پر جنسی زیادتی کرنے اور ویڈیو بنانے والے کو حراست میں لے لیا گیا ہے تاہم گرفتار شدگان کی شناخت ظاہر نہیں کی گئی ہے۔ ملزمان اور جنسی زیادتی کا شکار لڑکی کورونا کے مریض تھے اور ایک ہی وارڈ میں زیر علاج تھے۔

یہ خبر بھی پڑھیں : بھارت ؛ کورونا آئسولیشن وارڈ میں حاملہ خاتون سے طبی عملے کی اجتماعی زیادتی

قبل ازیں بھارت میں ہی ریاست بہار کے اسپتال انوگرا نارائن مگدھ میں 25 سالہ حاملہ خاتون چیک اپ کے لیے آئیں تو کورونا وائرس میں مبتلا ہونے کا شک ظاہر کرتے ہوئے انہیں آئسولیشن وارڈ میں داخل کرلیا گیا جہاں دو دن تک طبی عملہ خاتون کے ساتھ اجتماعی زیادتی کرتا رہا تھا۔

بھارت کو پہلے ہی خواتین کے لیے غیر محفوظ ملک کہا جاتا ہے جب کہ جنسی زیادتوں کے بڑھتے واقعات پر عالمی میڈیا میں ہندوستان کو ریپستان کہا گیا تھا اس کے علاوہ بھارت دنیا بھر میں کورونا وبا سے متاثر ہونے والا تیسرا بڑا ملک بھی ہے۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔