می ٹو مہم کا آغاز کرنے والی امریکی اداکارہ نے کورونا ٹیسٹنگ سسٹم کو ناقص قرار دیدیا 

ویب ڈیسک  جمعـء 7 اگست 2020
ہم کورونا کے اصل مریضوں کی تعداد نہیں جانتے لہذا تمام لوگ احتیاط برتیں، ایلسا میلانو

ہم کورونا کے اصل مریضوں کی تعداد نہیں جانتے لہذا تمام لوگ احتیاط برتیں، ایلسا میلانو

امریکی ادکارہ ایلسا میلانو کے 3 کورونا ٹیسٹ منفی آنے کے بعد کورونا اینٹی باڈیز ٹیسٹ مثبت آگیا۔ 

دنیا بھر میں می ٹو مہم کا آغاز کرنے والی امریکی اداکارہ ایلسا میلانو نے فوٹو شیئرنگ ایپ انسٹاگرام پر آکسیجن ماسک کے ہمراہ اپنی ایک تصویر شیئر کی اور کورونا ٹیسٹنگ کے نظام کو ناقص قرار دیتے ہوئے کہا کہ کورونا وائرس اور اینٹی باڈیز کے مجموعی طور پر 3 ٹیسٹ منفی آنے کے بعد اب میرا کورونا وائرس اینٹی باڈیز کا ٹیسٹ مثبت آیا ہے۔

اداکارہ نے اپنی پوسٹ میں لکھا کہ 2 اپریل کو دو ہفتے تک شدید بیمار رہنے کے بعد یہ میں ہوں، اس سے پہلے کبھی ایسا نہیں ہوا کہ مجھے سانس لینے میں دشواری کا سامنا کرنا پڑا، سونگھنے کی حس ختم ہوگئی تھی، سینے پر بوجھ تھا، بخار بھی کم نہیں ہورہا تھا اور سر میں بھی درد رہتا تھا، یہاں تک کہ مجھ میں کورونا وائرس کی ہر علامت موجود تھی لیکن اس کے باوجود میرے کورونا وائرس کے ٹیسٹ منفی آئے۔

View this post on Instagram

This was me on April 2nd after being sick for 2 weeks. I had never been this kind of sick. Everything hurt. Loss of smell. It felt like an elephant was sitting on my chest. I couldn’t breathe. I couldn’t keep food in me. I lost 9 pounds in 2 weeks. I was confused. Low grade fever. And the headaches were horrible. I basically had every Covid symptom. At the very end of march I took two covid19 tests and both were negative. I also took a covid antibody test (the finger prick test) after I was feeling a bit better. NEGATIVE. After living the last 4 months with lingering symptoms like, vertigo, stomach abnormalities, irregular periods, heart palpitations, shortness of breath, zero short term memory, and general malaise, I went and got an antibody test from a blood draw (not the finger prick) from a lab. I am POSITIVE for covid antibodies. I had Covid19. I just want you to be aware that our testing system is flawed and we don’t know the real numbers. I also want you to know, this illness is not a hoax. I thought I was dying. It felt like I was dying. I will be donating my plasma with hopes that I might save a life. Please take care of yourselves. Please wash your hands and wear a mask and social distance. I don’t want anyone to feel the way I felt. Be well. I love you all (well, maybe not the trolls. Just the kind people.)❤️

A post shared by Alyssa Milano (@milano_alyssa) on

ایلسا میلانو نے لکھا کہ مارچ کے آخر تک کورونا وائرس کے 2 ٹیسٹ منفی آنے کے بعد میں نے کورونا اینٹی باڈیز ٹیسٹ بھی کروایا لیکن وہ بھی منفی آیا تاہم اس کے باوجود مجھے سکون نہیں مل رہا تھا اور میں بہت مشکل میں تھی آخرکار 4  ماہ ان تمام علامات کے ساتھ رہنے کے بعد میں نے ایک بار پھر کورونا اینٹی باڈیز ٹیسٹ کروانے کا فیصلہ کیا جو مثبت آیا، یعنی کہ میں کورونا وائرس کا شکار رہی ہوں۔

ادکارہ نے مزید لکھا کہ میں آپ سے درخواست کرتی ہوں کہ ہمارا ٹیسٹنگ سسٹم بہت ناقص ہے اور ہمیں کورونا وائرس کے اصل مریضوں کی تعداد کا نہیں پتہ، لہذا تمام  لوگ احتیاط برتیں اور ہاتھ صابن سے دھوئیں، فاصلہ برقرار رکھیں، کیوں کہ میں نہیں چاہتی جو میرے ساتھ ہوا وہ کسی اور کے ساتھ بھی ہو جب کہ میں ٹھیک ہونے کے بعد اپنا پلازمہ بھی عطیہ کروں گی تاکہ اس سے کسی کا فائدہ ہوسکے۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔