پی آئی بی کلفٹن پولیس چوکی اور تاجر کے گھر پر دستی بموں سے حملے

ایکسپریس اردو  پير 9 جولائ 2012

کراچی: کلفٹن اور پی آئی بی نامعلوم افراد نے تاجر کے گھر اور پولیس چوکی پر دستی بم سے حملہ کردیا، تاہم خوش قسمتی سے دونوں دستی بم نہ پھٹ سکے، واقعے کے باعث علاقہ مکین سخت خوف وہراس میں مبتلا ہوگئے، واقعات میں کوئی جانی یا مالی نقصان نہیں ہوا،تفصیلات کے مطابق کلفٹن میں نامعلوم ملزمان نے بھتہ نہ دینے پر تاجر کے گھر پر دستی بم سے حملہ کردیا اور فرار ہوگئے، خوش قسمتی سے دستی بم پھٹ نہ سکا، واقعے کے باعث اہل خانہ اور علاقہ مکینوں میں سخت خوف و ہراس پھیل گیا، ایکسپریس کے رابطہ کرنے پر ایس پی کلفٹن ڈاکٹر فرخ نے بتایا کہ ڈی ایچ اے خیابان مجاہد میں پلاٹ نمبر 39/1 اسٹریٹ 22 پر واقع بنگلے میں عبدالقادر نامی تاجر کرائے پر رہائش پذیر ہے

اتوار کو ایک موٹر سائیکل پر سوار 2 نامعلوم ملزمان ان کے بنگلے پر دستی بم پھینک کر فرار ہوگئے، نامعلوم ملزمان نے چند روز قبل ان سے 3 کروڑ روپے بھتہ طلب کیا تھا، بم ڈسپوزل یونٹ نے پولیس کو بتایا کہ دستی بم میں دھماکا خیز مواد شامل نہیں تھا اس لیے وہ پھٹ نہ سکا، ڈاکٹر فرخ نے مزید بتایا کہ ملزمان نے بھتہ نہ دینے پر ڈرانے دھمکانے کی غرض سے خالی دستی بم پھینکا اور فرار ہوگئے، انھوں نے شبہ ظاہر کیا کہ واقعے میں کوئی قریبی شخص ملوث ہوسکتا ہے۔

ایس پی ڈاکٹر فرخ کے مطابق عبدالقادر میمن کاروباری شخصیت ہیں اور وہ ڈائی میکنگ اور دیگر کاروبار سے وابستہ رہے ہیں اور اب ریٹائرڈ لائف گزار رہے ہیں جبکہ مذکورہ بنگلہ بھی انھوں نے کرائے پر حاصل کیا ہوا ہے، فوری طور پر واقعے کا مقدمہ درج نہیں کرایا گیا، واقعے کی اطلاع ملتے ہی پولیس کے اعلیٰ حکام اور بم ڈسپوزل یونٹ کے حکام بھی موقع پر پہنچ گئے اور علاقے کو گھیرے میں لے لیا، واقعے کے باعث تاجر کے اہل خانہ اور علاقہ مکینوں میں سخت خوف و ہراس پھیل گیا، پولیس ذرائع کا کہنا ہے مذکورہ تاجر نے چند روز قبل سائٹ ایریا میں کروڑوں روپے مالیت کا گودام فروخت کیا تھا جس کی وجہ سے ان سے بھتہ طلب کیا جارہا ہے،

ایس پی کلفٹن نے اس بات کی تصدیق نہیں کی،مزید براں پی آئی بی کالونی تھانے کی حدود تین ہٹی پل کے قریب ٹریفک پولیس چوکی پر موٹر سائیکل سوار ملزمان دستی بم پھینک کر فرار ہوگئے تاہم خوش قسمتی سے دستی بم پھٹ نہیں سکا، پولیس نے موقع پر پہنچ کر بم ڈسپوزل اسکواڈ کو طلب کرلیا، پولیس ذرائع کا کہنا ہے کہ جس جگہ دستی بم پھینکا گیا ہے وہاں ٹریفک پولیس چوکی اور خدمت خلق فاؤنڈیشن کا بوتھ بھی موجود ہے ، دستی بم حملے سے علاقے میں خوف وہراس پھیل گیا، بم ڈسپوزل اسکواڈ کے انسپکٹر غلام مصطفی نے ٹیم کے ہمراہ دستی بم کو ناکارہ بنایا ، بی ڈی ایس ذرائع نے بتایا کہ پھینکا جانے والا دستی بم روسی ساختہRGD-1تھا جس میں سیفٹی پن اور ڈیٹونیٹر لگا ہوا تھا، دستی بم پھینکے جانے کا مقصد صرف خوف و ہراس پھیلانا تھا، ملزمان نے دستی بم کی سیفٹی پن بھی نہیں نکالی تھی، پولیس نے واقعے کا مقدمہ درج کرکے تفتیش شروع کردی ہے۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔