لاہورمیں 4 خواتین سے جنسی درندگی، 3 کو اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنایا گیا

نمائندگان ایکسپریس  پير 21 ستمبر 2020
گوجرانوالہ: متاثرہ لڑکی اور اس کا والد میڈیا کو تفصیلات بتا رہے ہیں ۔  فوٹو : ایکسپریس

گوجرانوالہ: متاثرہ لڑکی اور اس کا والد میڈیا کو تفصیلات بتا رہے ہیں ۔ فوٹو : ایکسپریس

 لاہور / کاہنہ / بوریوالا / پاکپتن: لاہور کے مختلف علاقوں میں نوجوان لڑکی سمیت 4 خواتین کو جنسی درندوں نے زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا جن میں 3 خواتین سے اجتماعی زیادتی کی گئی ، بوریوالا میں 15 سالہ لڑکی اور پاکپتن کے علاقے میں 7 سالہ بچی بھی درندگی کا نشانہ بنی ، لاہور سے اپنے رپورٹر کے مطابق ملت پارک میں 17 سالہ لڑکی کو3 اوباشوں نے اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا، میڈیکل رپورٹ میں زیادتی کی تصدیق ہوگئی۔

پولیس نے متاثرہ لڑکی کے والد کی مدعیت میں مقدمہ درج کر کے ملزمان کی گرفتاری کے لئے قانونی کارروائی شروع کردی۔ملزم محمدعلی نے 2 ساتھیوں کے ساتھ مل کراسلحہ کے زور پر لڑکی کو زیادتی کا نشانہ بنایا، ،ایک اور واقعہ میں لاہور کے علاقہ قائد اعظم انڈسٹریل اسٹیٹ میں ایک خاتون کو اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا گیا، نرسری ساٹ کی رہائشی خاتون کا خاوند سوئی گیس محکمہ میں ملازم ہے ۔

گزشتہ روز خاتون کی سہیلی سمیرا اپنے ساتھیوں کے ہمراہ اسے ملنے آئی، اس دوران ملزمان نے اسے نشہ آور اشیا کھلا کر باری باری زیادتی کا نشانہ بنایا ، پولیس کیمطابق متاثرہ خاتون کو فوری میڈیکل کے لیے مقامی ہسپتال پہنچایا گیا اور اس کی درخواست پر ملزموں کے خلاف مقدمہ درج کر کے تفتیش شروع کردی ہے۔  لاری اڈا کے علاقے گریٹر اقبال پارک میں 14 سالہ لڑکی زیادتی کی گئی، پولیس نے متاثرہ لڑکی کے بیان پر ملزم کو گرفتار کرلیا۔

پولیس ذرائع کا کہناتھا کہ ملزم بلال ورغلا کر لڑکی کو گریٹر اقبال پارک لایا اور زیادتی کے بعد اسے لے کر لاری اڈا پناہ گاہ آیا،شک پر انتظامیہ نے لڑکی سے پوچھا تو اس نے سچ بتا دیا،ملزم بلال لڑکی کامحلہ داربتایا جاتا ہے ، ایک اور واقعہ میں تھانہ اسلام پورہ کی حدود میں جمیل نامی ملزم نے 12 سالہ بچی سے زبردستی زیادتی کی کوشش کی، بچی کے شور سے محلے والے اکھٹے ہوگئے ، ملزم بچی کو چھوڑ کر فرار ہوگیا ۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔