فش ہاربر پر کروڑوں روپے کی 8 لانچیں جل گئیں، رزاق آباد میں تیل کے گودام میں آتشزدگی

اسٹاف رپورٹر  بدھ 14 اکتوبر 2020
فش ہاربر میں آتشزدگی کے بعد کروڑوں روپے مالیت کی لانچیں راکھ کا ڈھیر بن گئیں،لانچ مالکان اور مچھیرے جائے وقوع پر جمع ہیں ۔  فوٹو : ایکسپریس

فش ہاربر میں آتشزدگی کے بعد کروڑوں روپے مالیت کی لانچیں راکھ کا ڈھیر بن گئیں،لانچ مالکان اور مچھیرے جائے وقوع پر جمع ہیں ۔ فوٹو : ایکسپریس

 کراچی:  فش ہاربر پر بوٹ ایریا میں آتشزدگی سے بھاری مالیت کا پٹرول، ڈیزل اور کروڑوں روپے مالیت کی 8 لانچیں جل گئیں۔

پیر اور منگل کی درمیانی شب فش ہاربر میں کالا پانی کے مقام پر برتھ نمبر9 شپ بلڈنگ بوٹ ایریا میں کھڑی لانچوں میں اچانک آگ بھڑک اٹھی جو دیکھتے ہی دیکھتے شدت اختیار کر گئی۔

ابتدائی طور پر کے پی ٹی کی 3 اور کے ایم سی کا ایک فائر ٹینڈر موقع پر پہنچا فائرفائٹرز نے آگ بجھانے کا کام شروع ہی کیا تھا کہ چاروں فائر ٹینڈرز کا پانی ختم ہوگیا، کچھ دیر واٹر باؤزر کا انتظار کرنے کے بعد تمام فائرٹینڈرز پانی لینے چلے گئے جس کے باعث 40 منٹ آگ بجھانے کا کام رکا رہا جس کے باعث آگ نے کئی لانچوں کو لپیٹ میں لے لیا اس دوران 2 کارگو لانچوں سمیت 8 لانچیں اور وہاں رکھی قیمتی لکڑی جل کر راکھ ہوگئی۔

موقع پر موجود افراد کے مشتعل ہونے پر رینجرز کے افسران اور اہلکار بھی موقع پر پہنچ گئے رینجرز افسران نے بھی فائرفائٹرز پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اپنے اپنے ادارے کو فون کرکے فوری پانی منگوائیں بعدازاں کے پی ٹی کے4  اور کے ایم سی کے 3 اور پاک بحریہ کا ایک فائر ٹینڈر موقع پر پہنچا اور آگ بجھانے کا کام دوبارہ شروع کیا گیا۔ اس دوران پانی کی کمی دورکرنے کے لیے ایک واٹر ٹینکر بھی طلب کرلیا گیا۔

موقع پر موجود افراد کا کہنا تھا کہ آگ لگنے کی اطلاع فائر بریگیڈ کو بروقت دی گئی تاہم فائربریگیڈ کا عملہ تاخیر سے پہنچا جس کے باعث آگ شدت اختیار کرگئی اور پھر فائرٹینڈرز کا پانی ختم ہوگیا اور وہ واپس چلے گئے ماہی گیروں اور لانچوں کے مالکان نے بتایا کہ مجموعی طور پر 2 کارگو لانچوں سمیت 8 لانچیں اور کشتیاں بنانے کی قیمتی لکڑی جل کر راکھ ہوگئی۔

لانچ مالکان کا کہنا تھا کہ کارگو لانچ 2 کروڑ روپے سے زائد مالیت کی جبکہ دیگر مچھلی کے شکار کی لانچیں بھی ایک سے ڈیڑھ کروڑ روپے مالیت کی تھیں اتنے بڑے نقصان کے باجود وفاق اور سندھ حکومت یا متعلقہ محکمے کے کسی افسر نے موقع آنے کی زحمت تک نہ کی۔

شاہ لطیف تھانے کی حدود نیشنل ہائی وے رزاق آباد پولیس ٹریننگ سینٹر کے عقب کے رہائشی علاقے میں تیل کے گودام میں آگ لگنے کی اطلاع پر پورٹ قاسم ، کے پی ٹی اور کے ایم سی کے فائر ٹینڈرز موقع پر پہنچ گئے، فائربریگیڈ کے عملے نے ڈھائی گھنٹے کی جدوجہد کے بعد آگ پر قابو پالیا۔

پولیس کے مطابق آتشزدگی کے نتیجے میں کسی قسم کا جانی نقصان نہیں ہوا تاہم بھاری مالیت کا پٹرول اور ڈیزل جل گیا، علاقہ مکیینوں کا کہنا ہے کہ مذکورہ گودام میں ایرانی اسمگل شدہ پیٹرول و ڈیزل رکھا جاتا ہے جو یہاں سے شہر میں سپلائی کیا جاتا ہے۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔