واٹربورڈ نے ریکوری بڑھانے کیلیے مناسب حکمت عملی وضع کرلی

اسٹاف رپورٹر  ہفتہ 21 دسمبر 2013
جو صارفین ادائیگی کے بغیر اپنے کنکشنز لگا لیتے ہیں ان کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی۔ فوٹو: فائل

جو صارفین ادائیگی کے بغیر اپنے کنکشنز لگا لیتے ہیں ان کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی۔ فوٹو: فائل

کراچی: کراچی واٹر اینڈ سیوریج بورڈ نے ریکوری بڑھانے کے لیے مناسب حکمت عملی وضع کر لی ہے اور نادہندگان کے خلاف سخت کاروائی کا فیصلہ کیاہے۔

جس میں لینڈ ریو نیو ایکٹ کے تحت کاروائی بھی شامل ہے، واٹر بورڈ شہر ی خدمتی ادارہ ہے لہٰذا حتمی اقدام اور سخت کارروائی سے قبل گھریلو،بلک، صنعتی ،تجارتی اور تمام سرکاری اداروں اور بلڈرز کو آخری مو قع دیا جارہا ہے کہ تمام صارفین35فیصد بلز میں رعایت کی سہولت سے 31دسمبر تک استفادہ کرلیں،اس کے بعد Rebate کی یہ سہولت بھی ختم کردی جائے گی ،واٹر بورڈ کے ریو نیو ڈپارٹمنٹ نے ابتدائی مر حلہ میں تمام نادہندگان صارفین کے پانی و سیوریج کنکشنز منقطع کر نے کے لیے ٹائو نز کی سطح پر ریکو ری اور ڈسکنکشن ٹیمو ں کی تشکیل مکمل کر لی ہے ۔

یہ ٹیمیں فوری طور پر متحرک کر دی گئی ہیںاور بلا تفریق ہر ناد ہندہ کے خلاف کاروائی کی جارہی ہے جن سرکاری و نیم سرکاری اداروں ،صنعتی وتجارتی یو نٹوں،بلڈرز سمیت تمام صارفین جن پر بھی واٹر بورڈ کے واجبات ہیں ان کے کنکشنزمنقطع کر نے اور لینڈ ریو نیو ایکٹ کے تحت اقدامات کے علاوہ ایف آئی آر کٹوانے ،کے اختیارات بھی استعمال کیے جائیں گے، دریں اثناء ڈسکنکشن ٹیموں نے جاری مہم کے دوران 780 کنکشنز منقطع کر کے پائپ،مو ٹریں اور دوسرا سامان ضبط کیا،یہ بات بھی اصولی طور پر طے کر لی گئی ہے کہ جن نادہندگان کے کنکشنز منقطع کئے جارہے ہیں اگر انھوں نے واجبات ادا کیے بغیر غیر قانونی طور پر از خود دوبارہ کنکشنز لگا لیے تو ان کیخلاف بھی FIR درج کرادی جائے گی اس لیے کہ سرکاری تنصیبات کو غیر قانونی طور پر نقصان پہنچانا قانو ناً جر م ہے،جو صارفین ادائیگی کے بغیر اپنے کنکشنز لگا لیتے ہیں ان کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔