بنیادی خسارہ سرپلس ہو چکا، بیروزگاری کا گراف جلد نیچے آئیگا ، حفیظ شیخ

نمائندہ ایکسپریس  جمعـء 16 اکتوبر 2020
مراعاتی پیکیج سے تعمیراتی صنعت بحال ہونا شروع ہوگئی،گورنرپنجاب،برآمدی لاگت کم،بلاسود قرضے دیے جائیں،طارق مصباح
 فوٹو:فائل

مراعاتی پیکیج سے تعمیراتی صنعت بحال ہونا شروع ہوگئی،گورنرپنجاب،برآمدی لاگت کم،بلاسود قرضے دیے جائیں،طارق مصباح فوٹو:فائل

 لاہور:  وزیر اعظم کے مشیر برائے خزانہ ڈاکٹر عبدالحفیظ شیخ نے کہا ہے کہ بنیادی خسارہ کئی برسوں کے بعد سرپلس میں بدل چکا ہے جب کہ آنے والے دنوں میں بیروزگاری کا گراف تیزی سے نیچے آئے گا۔

مشیر برائے خزانہ ڈاکٹر عبدالحفیظ شیخ نے کہا ہے کہ حکومت معیشت کو پائیدار ترقی کی راہ پر گامزن کرنے اور نوجوانوں کیلیے روزگار کے مواقع پیدا کرنے کیلیے اقدامات کررہی ہے، حکومت نے اپنے اخراجات کم کیے ہیں،بنیادی خسارہ کئی برسوں کے بعد سرپلس میں بدل چکا ہے، آنے والے دنوں میں بیروزگاری کا گراف تیزی سے نیچے آئے گا۔

لاہور چیمبر آف کامرس کے صدر میاں طارق مصباح کی سربراہی میں تاجروں کے وفد سے گفتگوکرتے ہوئے انھوں نے کہا موجودہ حکومت جب اقتدار میں آئی تو کرنٹ اکاؤنٹ خسارے اور مصنوعی شرح تبادلہ کے سخت چیلنجوں کا سامنا کرنا پڑا۔ یہ عوامل غیر صنعتی ، برآمدات میں رکاوٹ اور درآمدات کو فروغ دینے کا سبب بن رہے تھے۔

انہوں نے کہا کہ حکومت ریفنڈز کے مسئلے کو بھی مستقل بنیادوں پر حل کرنے کیلیے پرعزم ہے ۔حکومت مزید شعبوں جیسے حلال فوڈ ، فارماسیوٹیکلز وغیرہ کو بھی اسی طرح کی سہولت کے نظام میں لانے کے لئے تیار ہے۔

اس موقع پر گورنر پنجاب چوہدری محمد سرور نے کہا کہ حکومت نجی شعبے کوبہت اہمیت دیتی ہے۔موجودہ حکومت نے کرنٹ اکاؤنٹ خسارے کو 20ارب ڈالر سے کم کرکے 3 ارب ڈالر کرنے کے لئے سخت محنت کی ہے۔

لاہور چیمبر کے صدر میاں طارق مصباح نے اس موقع پر برآمد کے تمام شعبوں کے لئے توانائی کی لاگت کم کرنے ،گیس کی 24 گھنٹے دستیابی، چھوٹے تاجروں کو بلا سود قرض،شرح سود میں مزید کمی سمیت دیگر مطالبات پیش کیے۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔