گائے سے براہِ راست باتیں کیجئے، وہ خوش ہوجائے گی

ویب ڈیسک  اتوار 18 اکتوبر 2020
گائے انسانوں سے براہِ راست بات کرکے خوش ہوتی ہیں۔ فوٹو: فائل

گائے انسانوں سے براہِ راست بات کرکے خوش ہوتی ہیں۔ فوٹو: فائل

ویانا، آسٹریا: سائنسدانوں نے کسی فارم میں موجود گایوں کی نفسیات بتاتے ہوئے کہا ہے کہ ویڈیو کال، لاؤڈاسپیکر یا ریکارڈنگ کی بجائے ان سے براہِ راست بات کی جائے تو وہ خوش ہوتی ہیں اور اس پر غور بھی کرتی ہیں۔

آسٹریا سے آئی اس تحقیق کے مطابق ویڈیو کال سے خود گائے بھی اتنی ہی چڑتی ہیں جتنے ہم بیزار ہوتے ہیں۔ اس طرح یہ ضروری ہے کہ کسی فارم کے جانوروں سے براہِ راست بات کی جائے۔ ویانا کی یونیورسٹی آف ویٹرنری میڈیسن کی انیکا لینج کہتی ہیں کہ اگر رابطے مصنوعی ہوتے ہیں تو جانوروں پر بھی اثر نہیں کرتے۔

پالتو جانوروں میں گائے اپنی ضروریات کے لیے پکارتی اور مختلف آوازیں خارج کرتی ہے۔ یہ مخصوص فری کوئنسی پر اپنے بچوں سے باتیں بھی کرتی ہے۔ اگر انسان گائے کو کوئی نام دیدیں تو وہ اس پر کان دھرتی ہیں۔ اگر ان کا مالک پیار سے بات کرتا ہے تو وہ بہت خوش ہوتی ہیں۔

انیکا نے یہ تحقیق فرنٹیئرس ین سائیکولوجی میں شائع کرائی ہے۔ اس تحقیق میں 28 گایوں پر تجربات کئے گئے ہیں۔ اس میں گائے سے براہ راست باتیں کی گئیں اور انہیں ریکارڈنگ سنائی گئیں۔ لیکن جیسے ہی انسانوں نے گائے سے براہِ راست بات کی وہ خوش ہوئیں اور جواب میں اپنی گردن ہلائی جو اس کے دوستانہ رویے کو ظاہر کرتا ہے۔

اسی طرح گائے کے کان نیچے کی جانب ڈھلکے نظر آئے جو اس کے بہتر موڈ کو ظاہر کرتے ہیں۔ اس طرح ثابت ہوا کہ گائے سے براہِ راست باتیں کی جائیں تو وہ بہت خوش ہوتی ہیں۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔