قائد اعظم ٹرافی، تابش نے سلیکٹرز کو پھر آئینہ دکھا دیا

اسپورٹس رپورٹر / اسپورٹس ڈیسک  پير 26 اکتوبر 2020
کراچی: سینٹرل پنجاب سے میچ میں سندھ کے تابش خان کا بولنگ ایکشن، دوسری تصویر میں خیبر پختونخوا کیخلاف سنچری کی تکمیل پر بلوچستان کے بسم اللہ خان مسرور (فوٹو: پی سی بی)

کراچی: سینٹرل پنجاب سے میچ میں سندھ کے تابش خان کا بولنگ ایکشن، دوسری تصویر میں خیبر پختونخوا کیخلاف سنچری کی تکمیل پر بلوچستان کے بسم اللہ خان مسرور (فوٹو: پی سی بی)

 کراچی:  ڈومیسٹک کرکٹ کے سب سے بڑے ایونٹ قائد اعظم ٹرافی کا کراچی میں آغازہو گیا،تابش خان نے سلیکٹرز کو پھرآئینہ دکھا دیا،مسلسل عمدہ کارکردگی کے باوجود نظر انداز شدہ فاسٹ بولر نے 38 ویں مرتبہ فرسٹ کلاس اننگز میں 5 وکٹیں لیں، سیزن کی پہلی سنچری بلوچستان کے بیٹسمین بسم اللہ خان کے نام رہی۔ ابتدائی روز سندھ نے سینٹرل پنجاب کی 205 رنز پر 9 وکٹیں اڑا دیں، احمد شہزاد 69 اور محمد سعد 51 رنز کے ساتھ نمایاں رہے، کپتان اظہر علی کی ہمت 11 رنز پر جواب دی گئی، تابش نے 5 وکٹیں لیں۔

خیبر پختونخوا کے خلاف ناقابل شکست 102 رنز سے بسم اللہ خان نے بلوچستان کا ٹوٹل پہلے دن کے اختتام تک 7 وکٹ پر 310 تک پہنچایا، کاشف بھٹی نے 98 اور سمیع اسلم نے 56 رنز بنائے۔ ادھر ناردرن کو 165 پر ڈھیر کرنے والی سدرن پنجاب کی ٹیم نے ایک وکٹ پر 174 رنز بناکر 9کی برتری حاصل کرلی، کپتان شان مسعود 80  اور حسین طلعت 53 رنز پر ناقابل شکست رہے،اس سے قبل ناردرن کی جانب سے عمر امین اور فیضان ریاض نے 29، 29 رنز بنائے، زاہد محمود نے 4 اور آغا سلمان نے3کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا۔

تفصیلات کے مطابق قائد اعظم ٹرافی کے ابتدائی روز نیشنل اسٹیڈیم پر سینٹرل پنجاب نے سندھ کے خلاف 9 وکٹیں 205 رنز کے دوران گنوا دیں، احمد شہزاد نے 69 رنز کی عمدہ اننگز کھیلی، محمد سعد نے 51 رنز اسکور کیے، ٹیسٹ کپتان اظہرعلی 11 رنز بنا سکے۔ کامران اکمل 24، عثمان صلاح الدین 11، حسن علی اور علی زریاب 6،6رنز بنا کر آؤٹ ہوئے۔ مسلسل عمدہ کارکردگی کے باوجود سلیکٹرز کی توجہ سے محروم تابش خان نے 44 رنز کے عوض 5 وکٹیں حاصل کیں۔ فرسٹ کلاس کرکٹ میں انھوں نے 38 مرتبہ یہ کارنامہ انجام دیا۔

یو بی ایل اسپورٹس کمپلیکس میں بلوچستان نے خیبرپختونخوا کے خلاف ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کرنے کے اپنے فیصلے کو درست ثابت کرتے ہوئے پہلے دن 89 اوورز میں 7 وکٹ پر 310 رنز بنا لیے، بسم اللہ خان 102 پر ناٹ آؤٹ رہے۔ یہ قائداعظم ٹرافی 2020 میں کسی بھی کرکٹر کی پہلی سنچری ہے جوکوئٹہ میں پیدا لینے والے بیٹسمین کے نام ہوئی،انھوں نے کاشف بھٹی کے ہمراہ چھٹی وکٹ کے لیے 160 رنز جوڑے،کاشف نروس نائینٹیز کا شکار ہوتے ہوئے 98 رنز بناکر پویلین واپس لوٹ گئے۔

سمیع اسلم نے56 رنز بنائے، عبدالرحمان مزمل 17،عمران فرحت 11 جبکہ عمران بٹ اور تیمور علی کوئی رن بنائے بغیر پویلین لوٹے، جنید خان، عمران خان سینئر اور احمد جمال نے 2،2 کھلاڑیوں کو واپس ڈریسنگ روم پہنچایا۔ دوسری جانب این  بی پی اسپورٹس کمپلیکس پرناردرن کو 165 رنز تک محدود کرنے والی سدرن پنجاب کی ٹیم نے پہلی اننگز میں 1 وکٹ پر174 رنز بنا کر پوزیشن مضبوط کرلی۔

دن کے اختتام تک کپتان شان مسعود 80  اور حسین طلعت 53 رنز  کے ساتھ کریز پر موجود تھے۔  قبل ازیں ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کرنے والی ناردرن کی ٹیم پہلی اننگز میں 48.4 اوورز میں 165 رنز بناکر میدان بدر ہوگئی، عمر امین اور فیضان ریاض  29،29، سرمد بھٹی 25 جبکہ ذیشان ملک  اور حماد اعظم24،24 رنزبنا کر آؤٹ ہوئے، زاہد محمود نے 41 رنز دے کر  4 کھلاڑیوں کو پویلین بھیجا، سلمان علی نے 34 رنز کے عوض 3 وکٹیں حاصل کیں۔

بغیرپاکستان کی نمائندگی کیے تابش573 وکٹیں حاصل کر چکے

پاکستان میں ٹیسٹ کھیلنے کا موقع پائے بغیر سب سے زیادہ فرسٹ کلاس وکٹیں حاصل کرنے والے بدقسمت بولرز کی فہرست میں تابش 573 شکار کے ساتھ چوتھے نمبر پر موجود ہیں، وہ اس لسٹ میں واحد بولر ہیں جنھوں نے 38 مرتبہ اننگز میں 5 وکٹوں کا کارنامہ انجام دیا، قائد اعظم ٹرافی میں 500 شکار مکمل کرنے کیلیے انھیں مزید 10 وکٹیں درکار ہیں۔

نیشنل اسٹیڈیم کے گراؤنڈ پر پی سی بی کا لوگو تشویش کا باعث بن گیا

قائداعظم ٹرافی کے آغاز پر نیشنل اسٹیڈیم  کے گراؤنڈ پر پی سی بی کا لوگو تشویش کا باعث بن گیا، فیلڈ میں چسپاں لوگو میں اردو میں پاکستان تحریرہے،دوران میچ نادانستگی میں کھلاڑی اس پر قدم بھی رکھ رہے تھے، کھیل کے بعد گراؤنڈ اسٹاف سے بھی ایسی غلطی سرزد ہونے کا خدشہ موجود ہے۔ دریں اثنا رابطے پر وعدے کے باوجود  بورڈ کے ترجمان  کا موقف سامنے نہیں  مل سکا۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔