ملتان انتظامیہ کا پی ڈی ایم کو جلسے کی اجازت دینے سے انکار

ویب ڈیسک  جمعرات 26 نومبر 2020
پیپلزپارٹی نے ملتان میں قلعہ کہنہ قاسم باغ میں 30 نومبر کو پی ڈی ایم کو جلسہ کرنے کی درخواست دی تھی  . فوٹو : فائل

پیپلزپارٹی نے ملتان میں قلعہ کہنہ قاسم باغ میں 30 نومبر کو پی ڈی ایم کو جلسہ کرنے کی درخواست دی تھی . فوٹو : فائل

ملتان: ڈپٹی کمشنر ملتان نے پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) کو 30 نومبر کو جلسے کی اجازت دینے سے انکار کردیا۔

پاکستان پیپلزپارٹی نے ملتان میں قلعہ کہنہ قاسم باغ میں 30 نومبر کو پی ڈی ایم کو جلسہ کرنے کی درخواست دی تھی جس پر ڈپٹی کمشنرملتان نے اجازت دینے سے انکار کرتے ہوئے کہا کہ شہر میں کورونا کیسزکی تعداد میں تیزی سے اضافہ ہورہا ہے لہذا جلسے کی اجازت نہیں دے سکتے۔

اس خبر کو بھی پڑھیں :’’اپوزیشن لوگوں کی زندگیاں خطرے میں ڈال رہی ہے، جلسوں سے کچھ نہیں ہونا‘‘

دوسری طرف پولیس نے علی موسیٰ گیلانی سمیت دیگر رہنماؤں کو گزشتہ روز بغیر اجازت ریلی نکالنے پر گرفتار کیا تھا جنہیں علاقہ مجسٹریٹ کی عدالت میں پیش کیا گیا، علاقہ مجسٹریٹ نے دلائل سننے کے بعد علی موسیٰ گیلانی سمیت دیگر رہنماؤں کو ایک ایک لاکھ روپے کے مچلکوں کے عوض رہا کرنے کا حکم دیا۔

علی موسیٰ گیلانی کا رہائی کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا کہ انہیں عوام کے حقوق کی جنگ لڑنے پر گرفتار کیا گیا، ملتان شہر ڈپٹی کمشنر کی جاگیر نہیں بلکہ عوام کی جاگیر ہے تاہم 30 نومبر کو پی ڈی ایم کا جلسہ لازمی ہو گا۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔