میانمار میں فوجی بغاوت کے خلاف احتجاج جاری، مزید 2 مظاہرین ہلاک

ویب ڈیسک  پير 8 مارچ 2021
فوجی بغاوت کے خلاف مظاہروں میں ہلاک ہونے والوں کی تعداد 70 سے تجاوز کرگئی، فوٹو : رائٹرز

فوجی بغاوت کے خلاف مظاہروں میں ہلاک ہونے والوں کی تعداد 70 سے تجاوز کرگئی، فوٹو : رائٹرز

رنگون: میانمار میں فوجی بغاوت کے خلاف جاری احتجاج میں شدت آگئی جس کے دوران پولیس فائرنگ سے مزید 2 مظاہرین ہلاک ہوگئے۔

عالمی خبر رساں ادارے کے مطابق میانمار میں فوجی بغاوت کے خلاف ملک گیر احتجاج جاری ہے۔ پولیس کی براہ راست فائرنگ کے نتیجے میں مزید دو مظاہرین ہلاک جب کہ درجن سے زائد زخمی ہوگئے۔

Mayanmar Protestor 2

فوجی بغاوت کے خلاف ملک گیر شروع ہونے والے مظاہروں کو ملٹری قیادت نے طاقت سے کچلنے کا فیصلہ کیا۔ آج ہونے والی دو ہلاکتوں کے بعد صرف ایک ہفتے میں پولیس فائرنگ سے ہلاک ہونے والوں کی تعداد 70 سے تجاوز کرگئی۔

Mayanmar Protestor

فوجی بغاوت کے خلاف سب سے پہلے ملک کے بڑے اسپتالوں کے ڈاکٹرز نے احتجاج کرتے ہوئے کام کرنے سے انکار کردیا تھا۔ یہ مہم تین نوجوان ڈاکٹرز نے شروع کی تھی۔ جس کے بعد آہستہ آہستہ شروع ہونے والے احتجاج نے اب ملک گیر مظاہروں کی شکل اختیار کرلی ہے۔

Mayanmar Protestor 3

واضح رہے کہ یکم فروری کو فوج نے اقتدار پر قبضہ کرکے حکمراں آنگ سان سوچی کو حراست میں لے لیا تھا اور ایک سال کے لیے ملک بھر میں ایمرجنسی نافذ کردی تھی۔

 

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔