اینٹی وائرس کمپنی کے بانی جان مکافی کی ہسپانوی جیل میں پراسرار موت

ویب ڈیسک  جمعرات 24 جون 2021
جان مکافی نے 1987 میں دنیا کا پہلا کمرشل اینٹی وائرس سافٹ ویئر پیش کرکے شہرت حاصل کی۔ (فوٹو: انٹرنیٹ)

جان مکافی نے 1987 میں دنیا کا پہلا کمرشل اینٹی وائرس سافٹ ویئر پیش کرکے شہرت حاصل کی۔ (فوٹو: انٹرنیٹ)

بارسلونا: کمپیوٹر سیکیورٹی کے برطانوی نژاد امریکی ماہر اور مشہور اینٹی وائرس کمپنی ’’مکافی‘‘ کے بانی، جان مکافی گزشتہ روز بارسلونا، اسپین کی جیل میں پراسرار طور پر مردہ پائے گئے تاہم اس کی ممکنہ وجہ خودکشی کو قرار دیا جارہا ہے۔

75 سالہ جان مکافی کو پچھلے سال بارسلونا ایئرپورٹ سے ترکی کےلیے روانہ ہونے سے قبل گرفتار کیا گیا تھا۔

ان پر امریکا میں ٹیکس چوری اور مالیاتی ہیر پھیر کے متعدد مقدمات چل رہے تھے جبکہ طویل عرصے تک عدالت میں حاضر نہ ہونے کی وجہ سے امریکی عدالتیں انہیں مفرور قرار دے چکی تھیں۔

اسپین میں گرفتاری کے بعد امریکی محکمہ انصاف نے ہسپانوی عدالت میں درخواست دائر کی کہ مکافی کو امریکا کے حوالے کیا جائے تاکہ ان کے خلاف چلنے والے مقدمات آگے بڑھائے جاسکیں۔

22 جون کو اسپین کی عدالت نے یہ درخواست منظور کرتے ہوئے مکافی کو امریکا کے حوالے کرنے کا فیصلہ سنایا، جس کے بعد انہیں آج امریکی حکام کی تحویل میں امریکا منتقل کیا جانا تھا۔

خبروں کے مطابق، جان مکافی اپنے خلاف لگائے گئے الزامات سے انکاری تھے اور ان کا مؤقف تھا کہ امریکی حکومت ان کے سیاسی نظریات برداشت کرنے کےلیے تیار نہیں؛ اور اسی لیے یہ تمام مقدمات بنائے گئے ہیں۔

مختلف یورپی خبر رساں ایجنسیوں کا کہنا ہے کہ جان مکافی کی موت بظاہر خودکشی کا نتیجہ لگتی ہے کیونکہ وہ کئی دنوں سے شدید نفسیاتی دباؤ کا شکار تھے۔ یہ بھی کہا جارہا ہے کہ جائے وقوعہ پر تمام شواہد خودکشی ہی کو ظاہر کرتے ہیں۔

جان مکافی نے پہلی بار 1987 میں اس وقت شہرت حاصل کی جب انہوں نے اپنے ہی نام ’’مکافی‘‘ سے دنیا کا پہلا کمرشل اینٹی وائرس سافٹ ویئر تیار کیا جسے فروخت کرنے کےلیے ’’مکافی ایسوسی ایٹس‘‘ نامی کمپنی بھی قائم کی۔

یہ کمپنی 2010 میں انہوں نے انٹیل کارپوریشن کو فروخت کردی، جس کی تمام مصنوعات اور سہولیات آج ’’انٹیل سیکیورٹی‘‘ کے تحت فراہم کی جارہی ہیں۔

جان مکافی کو سیاست کا بھی شوق تھا۔ وہ 2016 اور 2020 کے امریکی انتخابات میں لبرٹیریئن پارٹی کی جانب سے صدارتی امیدوار بھی نامزد ہوئے لیکن الیکشن جیتنے میں ناکام رہے۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔