ہم جنس پرستوں کی شادی کو قانونی حیثیت نہیں دے سکتے، روسی صدر

ویب ڈیسک  بدھ 14 جولائ 2021
یورپی یونین کا دباؤ روس کے معاملات میں دخل اندازی تصور کیا جائے گا، فوٹو: فائل

یورپی یونین کا دباؤ روس کے معاملات میں دخل اندازی تصور کیا جائے گا، فوٹو: فائل

 ماسکو: روس کے صدر ویلادیمیر پوٹن نے کہا ہے کہ ملک میں ہم جنس پرستوں کی شادیوں کو قانونی حیثیت نہیں دے سکتے۔

عالمی خبر رساں ادارے کے مطابق روس کے صدر ویلادیمیر پوٹن نے یورپ کی انسانی حقوق کی اعلیٰ عدالت کے ہم جنس پرست جوڑوں کی شناخت کو باضابطہ طور پر تسلیم کرنے کے مطالبے کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ کسی بھی صورت میں ہم جنس پرستوں کی شادی کو قانونی حیثیت نہیں دے سکتے۔

روسی صدر نے مزید کہا کہ اس عمل کے لیے دباؤ ڈالنا روس کے داخلی معاملات میں مداخلت سمجھی جائے گی۔ ہم جنس پرستوں کو شادی کی اجازت دینا روس کے آئین اور قانون کا مذاق اُڑانے کے مترادف ہوگا اور روسی ایسا نہیں ہونے دیں گے۔

قبل ازیں اسٹراسبرگ میں قائم ‘یوروپین کورٹ آف ہیومن رائٹس‘ نے ایک فیصلے میں کہا تھا کہ روس پر ایک ہی جنس سے تعلق رکھنے والے شہریوں کی نجی اور خاندانی زندگی کے معاملات کا احترام کرنا لازمی ہوگا۔

یورپی کورٹ نے مزید کہا تھا کہ روس  ہم جنس پرست جوڑوں کے باہمی رشتے کو تسلیم کرنے کے لیے ایک باقاعدہ قانونی فریم ورک مہیا کرے جیسا کہ تائیوان سمیت کئی رکن ممالک بھی کرچکے ہیں۔

واضح رہے کہ روس سے تعلق رکھنے والے ہم جنس پرست جوڑوں نے شادی کے اندراج میں ناکامی پر اپنے ملک کے خلاف یورپی کورٹ میں شکایات درج کرائی تھیں۔

 

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔