امریکا میں کورونا کے بعد ایک اور وائرس نے سر اُٹھا لیا

ویب ڈیسک  پير 19 جولائ 2021
امریکا میں یہ وائرس 2003 کے بعد سامنے آیا ہے، فوٹو: فائل

امریکا میں یہ وائرس 2003 کے بعد سامنے آیا ہے، فوٹو: فائل

ڈیلاس: امریکا میں کورونا وبا کے پھیلاؤ میں کمی دیکھی جا رہی ہے اور زندگی واپس اپنے ڈگر پر لوٹ رہی ہے لیکن اچانک ایک اور وائرس نے امریکیوں کو خوف میں مبتلا کردیا ہے۔

عالمی خبر رساں ادارے کے مطابق خطرناک بیماری کا سبب بننے والے وائرس ’’منکی پوکس‘‘ نے 2003 کے بعد امریکا میں دوبارہ اپنی موجودگی کا احساس دلایا ہے۔ نائیجیریا سے آنے والے ڈیلاس کے شہری میں اس وائرس کی موجودگی کا انکشاف ہوا ہے۔

امریکی شہر ڈیلاس کے رہائشی کو خارش، کھانسی، نزلہ اور بغل کے نیچے سوجن کی شکایت پر اسپتال میں داخل کیا گیا تھا۔ ان علامتوں کے باعث مریض کے طبی ٹیسٹس کیے گئے جس میں مریض کے منکی پوکس کا شکار ہونے کی تصدیق ہوئی۔

مذکورہ شخص نائجیریا کے شہر لیگوس سے جہاز کے ذریعے اٹلانٹا اور پھر وہاں سے ڈیلاس آیا تھا اور عین ممکن ہے کہ اس وائرس سے نائیجیریا میں ہی متاثر ہوا ہے۔ یہ وائرس زیادہ متعدی یا ہلاکت خیز نہیں تاہم کورونا وبا سے نبرد آزما امریکی شہریوں کو خوف میں مبتلا کردیا ہے۔

طیارے میں موجود دیگر مسافر ماسک لگانے کی وجہ سے ’’منکی پوکس‘‘ سے محفوظ رہے۔ ابتدا میں یہ چوہوں اور بندروں سے انسانوں میں منتقل ہوا تھا اور پھر انسانوں سے انسانوں میں منتقل ہوتا رہا ہے تاہم اب دہائی بعد منظر عام پر آیا ہے۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔