کشمیر الیکشن میں مریم نواز کو فوج کو نشانہ بنانے کا جواب مل گیا، فواد چوہدری

ویب ڈیسک  پير 26 جولائ 2021
مریم اور بلاول آزاد کشمیر الیکشن میں شکست پر مستعفی ہوجائیں، وفاقی وزرا کی پریس کانفرنس

مریم اور بلاول آزاد کشمیر الیکشن میں شکست پر مستعفی ہوجائیں، وفاقی وزرا کی پریس کانفرنس

 اسلام آباد: وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری نے کہا ہے کہ ن لیگ اور پی پی کو مریم نواز اور بلاول بھٹو سے آزاد کشمیر الیکشن میں شکست پر استعفیٰ لے لینا چاہیے۔

اسلام آباد میں وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری اور علی امین گنڈا پور نے مشترکہ پریس کانفرنس کی۔ فواد چوہدری نے آزاد کشمیر الیکشن میں کامیابی پر مبارک باد دیتے ہوئے کہا کہ کشمیر انتخابات میں تاریخی کامیابی ملی جس کے اثرات دور تک جائیں گے، اتنی بڑی کامیابی میں دھاندلی ممکن نہیں ہوتی، 56 فیصد سے زائد پولنگ ہوئی جس کا مطلب ہے لوگوں کو انتخابی عمل اور امیدوار پر اعتماد ہے، عمران خان آزاد کشمیر ہی نہیں مقبوضہ کشمیر میں بھی مقبول لیڈر ہیں، انہوں نے ہر وہ کام کیا جس سے کشمیر کی جدوجہد کو تقویت ملے۔

یہ بھی پڑھیں: آزاد کشمیرانتخابات میں تحریک انصاف نے میدان مارلیا

فواد چوہدری نے کہا کہ ن لیگ اور پی پی کو چاہیے کہ وہ مریم نواز اور بلاول بھٹو سے اس شکست پر استعفیٰ لے لیں، بلکہ ان کو خود ہی استعفیٰ دے دینا چاہیے اور اپنے گریبان میں جھانکنا چاہیے، مریم نواز کس منہ سے اتنی بڑی شکست کے بعد نائب صدر اور بلاول پارٹی چیئرمین ہیں، اب پیپلز پارٹی اور ن لیگ کو چاہیے کہ نئی لیڈر شپ کو ابھرنے دیں، آصف زرداری کی برتھ ڈے پر بلاول نے تحفہ دیا کہ باقی صوبوں کی طرح کشمیر میں بھی انکا کوئی حال نہیں رہا، آئندہ عام انتخابات میں سندھ میں بھی انکا یہی حال ہوگا،یہ انکی آخری حکومت ہے۔

فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ مریم نواز اپنی ریسرچ ٹیموں کو لگا کر پتہ لگالیں کہ ان تمام گفتگو عمران خان کو برا بھلا کہنے پر تھی، جبکہ عمران خان نے کشمیر اور کشمیر کے بیانیے کی بات کی،  عمران خان کشمیر میں وزیر اعظم اور صدر کا فیصلہ کریں گے، مریم نواز کو فوج کو مسلسل نشانہ بنانے کا جواب مل گیا ہے، ان کے فوج اور پاکستان مخالف بیانیے کا یہ نتیجہ ہے کہ وہاں کی حکومتی جماعت کو بدترین شکست کا سامنا کرنا پڑا۔

فواد چوہدری نے کہا کہ مریم نواز کے بیانیے کو کشمیری عوام نے مسترد کر دیا، یہ ممکن نہیں کہ آپ مودی کو بھی بلائیں اور توقع کریں کہ ہمیں کشمیری ووٹ بھی دیں گے، نواز شریف نے افغانستان کے نیشنل سیکیورٹی ایڈوائزر حمد اللہ محب سے جو ملاقات کی اسکے اثرات کشمیریوں نے دکھائے، ن لیگ کی لیڈر شپ کو نواز شریف کی ملاقات پر حقائق سے آگاہ کرنا چاہیے اور نواز شریف کو نوٹس دینا چاہیے۔

علی امین گنڈا پور نے کہا کہ ہم کشمیر کی 72 سالہ محرومی کا ازالہ کریں گے اور بہت جلد کشمیر کے لوگوں کو خوشخبری دیں گے، ہم نے پہلے کہا تھا اپوزیشن جماعتیں الیکشن سبوتاژ کرنا چاہتی ہیں، مختلف واقعات میں ہمارے 50 کارکنان زخمی اور دو شہید ہوئے انکا ازالہ کریں گے، عمران خان نے پہلے ہی کہا تھا کہ الیکشن کے رزلٹ کے بعد صدر وزیر اعظم اور اسپیکر کا فیصلہ کروں گا، الیکشن کمیشن کی جانب سے مجھ پر زیادتی کی گئی، مجھے تحفظات ہیں۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔