شہزاد اکبر تنازع؛ ترین گروپ کے رکن پنجاب اسمبلی نذیر چوہان کی ضمانت منظور

ویب ڈیسک  منگل 27 جولائ 2021
جہانگیر ترین گروپ نے نذیر چوہان کی گرفتاری پر تشویش کا اظہار کیا تھا   فوٹو: فائل

جہانگیر ترین گروپ نے نذیر چوہان کی گرفتاری پر تشویش کا اظہار کیا تھا فوٹو: فائل

 لاہور: عدالت نے وزیر اعظم کے مشیر برائے داخلہ شہزاد اکبر کی درخواست پر گرفتار کئے گئے رکن پنجاب اسمبلی نذیر چوہان کی ضمانت منظور کرلی۔ 

ایکسپریس نیوز کے مطابق لاہور پولیس نے کینٹ کچہری میں رکن پنجاب اسمبلی نذیر چوہان کو پیش کیا، فریقین کے دلائل سننے کے بعد عدالت نے ایک لاکھ روپے کے مچلکوں کے عوض رکن اسمبلی کی ضمانت منظور کرلی،عدالت نے حکم دیا کہ نذیر چوہان اگر کسی دوسرے مقدمے میں مطلوب نہیں تو انہیں رہا کر دیا جائے، بصورت دیگر انہیں جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھیج کر 10 اگست کو پیش کیا جائے۔

واضح رہے کہ لاہور پولیس نے  جوہر ٹاؤن سے تحریک انصاف کے جہانگیر ترین گروپ کے رکن پنجاب اسمبلی نذیر چوہان کو حراست میں لیا ہے، نذیر چوہان کی گرفتاری وزیر اعظم کے مشیر برائے داخلہ شہزاد اکبر کی مدعیت میں درج مقدمے کے تحت ہوئی ہے۔ پولیس نے نذیر چوہان کی گرفتاری کی تصدیق کرتے ہوئے کہا تھا کہ رکن پنجاب اسمبلی کو تفتیش اور وائس میچنگ کے لئے حراست میں لیا گیا ہے۔

دوسری جانب جہانگیر ترین گروپ نے نذیر چوہان کی گرفتاری پر تشویش کا اظہار کیا ہے، گروپ کے ارکان نے معاملے پر سیاسی اور قانونی لائحہ عمل کے لئے مشاورت بھی شروع کر دی ہے۔

تنازع کی وجوہات؛

جہانگیر ترین کے خلاف مقدمات پر قومی اور پنجاب اسمبلی کے ارکان پر مشتمل ایک گروپ وجود میں آیا تھا، جس میں نذیر چوہان بھی شامل تھے، نذیر چوہان نے ایک ٹی وی شو کے دوران شہزاد اکبر پر الزام لگائے تھے، جس پر شہزاد اکبر نے لاہور کے تھانہ ریس کورس میں پی ٹی آئی رہنما کے خلاف مقدمے کیلئے درخواست دی تھی۔ پولیس نے درخواست کی روشنی میں نذیر چوہان کے خلاف مقدمہ درج کرلیا تھا تاہم 2 ماہ تک انہیں گرفتار نہیں کیا گیا۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔