اپنے شہری کے خلاف کیس میں عدالتی کارروائی پر اثر انداز نہیں ہوتے، امریکی سفارت خانہ

ویب ڈیسک  منگل 27 جولائ 2021
کسی بھی ملک میں امریکی شہری اسی ملک کے قوانین کے تابع ہوتے ہیں، سفارتخانہ کا نور مقدم کیس کے تناظر میں بیان (فوٹو : فائل)

کسی بھی ملک میں امریکی شہری اسی ملک کے قوانین کے تابع ہوتے ہیں، سفارتخانہ کا نور مقدم کیس کے تناظر میں بیان (فوٹو : فائل)

 اسلام آباد: امریکی سفارت خانہ نے کہا ہے کہ کسی بھی ملک میں امریکی شہری اس ملک کے قوانین کے تابع ہوتے ہیں، امریکی سفارت خانہ کسی کیس میں عدالتی کارروائی پر اثر انداز نہیں ہوسکتا۔

اسلام آباد میں قائم امریکی سفارت خانہ نے اپنے ٹویٹر پیغام میں کہا ہے کہ کسی بھی دوسرے ملک میں امریکی شہری اس ملک کے قوانین کے تابع ہوتے ہیں اور امریکی شہری کے خلاف کسی کیس میں سفارت خانہ عدالتی کارروائی اور قانونی امور پر اثر انداز نہیں ہوسکتا۔

یہ پڑھیں : نور مقدم کیس: امریکی شہری ہوں پاکستانی نہیں، ملزم ظاہر جعفر 

ٹویٹر ییغام میں کہا گیا ہے کہ سفارت خانہ اپنے شہریوں کی خیریت دریافت کرسکتا ہے اور ان کی معاونت کے لیے انہیں وکلا کی ایک فہرست بھی فراہم کرسکتا ہے۔

واضح رہے کہ امریکی سفارت خانے نے یہ بیان نور مقدم قتل کیس کے ملزم امریکی شہری ظاہر جعفر کے اس بیان کے تناظر میں دیا ہے جس میں ملزم نے میڈیا سے گفتگو میں کہا تھا کہ میں امریکی شہری ہوں پاکستانی نہیں تاہم ٹویٹر پیغام میں اس کیس کا حوالہ نہیں دیا گیا۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔