دنیا کے 50 ذہین ترین نوجوانوں میں پاکستانی عمرانورجہانگیر بھی شامل

 ہفتہ 25 جنوری 2014
عمر انور ’’بحریہ میڈیکس‘‘  کے نام سے ایک فلاحی تنظیم بھی چلا رہے ہیں۔ فوٹو:فائل

عمر انور ’’بحریہ میڈیکس‘‘ کے نام سے ایک فلاحی تنظیم بھی چلا رہے ہیں۔ فوٹو:فائل

پاکستان کو عالمی سطح پرجہاں  تنہا کرنے کی سازشیں کی جارہی ہیں تو وہیں یہاں کے لوگوں کا ٹیلنٹ بھی دنیا بھر میں سر چڑھ کر بول رہا ہے اوراس کی تازہ مثال ایک ایسے کم عمر پاکستانی کی ہے جسے  دنیا کے 50 ذہین ترین نوجوانوں میں شامل کرلیا گیا ہے۔

برطانوی اخبار’’ٹیلی گراف‘‘ کے مطابق 21 سالہ پاکستانی طالب علم عمر انور جہانگیر جن کا تعلق کراچی سے ہے اور انہیں عالمی اقتصادی فورم کا کم عمر ترین مندوب ہونے کا بھی اعزاز حاصل ہے اب انہیں اس فورم کے گروپ ’’گلوبل شیپر‘‘ یعنی دنیا کو نئی شکل دینے والوں میں  بھی شامل کرلیا گیا ہے جس میں دنیا بھر کے 50 ذہین ترین افراد شامل ہیں، عمر انور جہانگیر پہلے پاکستانی اور کم عمر ترین رکن ہیں جنہیں اس گروپ میں شامل کیا گیا ہے۔

عمر انور میڈیکل کے طالب علم ہیں جو ’’بحریہ میڈیکس‘‘  کے نام سے ایک فلاحی تنظیم چلا رہے ہیں، بحریہ میڈکس کے علاوہ عمر ملازمت کے بارے میں تربیت فراہم کرنے والی ’’رومی اسٹریٹیجیز‘‘ نامی کمپنی کے سی ای او بھی ہیں۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔