پاک بھارت تجارت، امریکا نان ٹیرف بیریئرز ختم کرانے کیلیے متحرک ہے، ڈوڈمین

بزنس رپورٹر  منگل 28 جنوری 2014
پاکستان سے تعلقات میں آئندہ تجارت پر زیادہ توجہ دی جائیگی، توانائی بحران کو دورکرنے کیلیے اقدامات کررہے ہیں،ظہرانے سے خطاب۔ فوٹو: اے پی پی/فائل

پاکستان سے تعلقات میں آئندہ تجارت پر زیادہ توجہ دی جائیگی، توانائی بحران کو دورکرنے کیلیے اقدامات کررہے ہیں،ظہرانے سے خطاب۔ فوٹو: اے پی پی/فائل

کراچی: امریکا، پاکستان اور بھارت کے درمیان تعلقات میں بہتری کے لیے سرگرم عمل ہے کیونکہ دونوں ممالک کے درمیان تجارت کے فروغ کی راہ میں نان ٹیرف بیریئرز رکاوٹ ہیں۔

یہ بات کراچی میں تعینات امریکی قونصل جنرل مائیکل ڈوڈمین نے مقامی صنعتی گروپ راشد احمد صدیقی کے ظہرانے سے خطاب کے دوران کہی۔ انہوں نے کہا کہ امریکا نے گزشتہ دنوں دبئی میں پاکستان اور بھارتی صنعتکاروں کا ایک اجلاس بھی منعقد کیا تھا اور اس اجلاس کے دوررس نتائج برآمد ہوں گے، امریکا پاک بھارت نان ٹیرف بیریرز ختم کرانے کے لیے متحرک ہے، پاکستان اور امریکا قریب آکر خطے میں معاشی طاقت بن سکتے ہیں۔ امریکی قونصل جنرل نے کہا کہ امریکا کی جانب سے پاکستان کو صحت، تعلیم، انرجی کے ساتھ دیگرشعبوں میںتعاون فراہم کیا جارہا ہے اور پاک امریکا تعلقات میں مستقبل میں امداد کے ساتھ تجارت پر بھی زیادہ توجہ دی جائے گی۔

 photo 4_zps0fd1513f.jpg

مائیکل ڈوڈمین نے کہا کہ امریکا پاکستان کودرپیش توانائی بحران کو دورکرنے کے لیے ہرممکن اقدامات کررہا ہے اور امریکا کی جانب سے پاکستان میں تعلیم کے فروغ کے لیے بھرپور اقدامات کیے جارہے ہیں۔ اس موقع پر ایس ایم منیر نے کہا کہ امریکا پاکستان کو مالی امداد کے بجائے تجارتی لین دین میں زیادہ سے زیادہ فروغ دینے کی راہ ہموارکرے۔ انہوںنے کہا کہ امریکاتجارت کے فروغ کے لیے پاکستانی مصنوعات کوامریکن منڈیوں تک رسائی فراہم کرے تاکہ پاکستانی برآمدکنندگان کو امریکن منڈیوں میںمواقع تلاش کرنے کاموقع مل سکے اورپاک امریکا تجارت میں اضافے کوممکن بنایا جاسکے۔

میاں زاہد حسین نے پاکستان اورامریکا کے مابین تعلقات میں مزید بہتری اور دوطرفہ تجارت کو فروغ دینے کے لیے تجارتی وفود کے تبادلے پرزوردیا اورکہا کہ پاکستان اورامریکا کے مستحکم تعلقات دونوں ممالک کے لیے ضروری ہیں جبکہ تقریب کے میزبان راشد احمد صدیقی نے امریکن قونصل جنرل مائیکل ڈوڈمین کی جانب سے پاکستان اور امریکا کے تعلقات میں بہتری کے کردارکوسراہتے ہوئے کہا کہ مائیکل ڈوڈمین تاجربرادری اورپاکستان کے ساتھ دل سے تعلقات کووسعت دینے پر عمل پیرا ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان اور امریکا کو تعلقات میں بہتری اور استحکام کی پالیسی کواپناناہوگا۔ کاٹی کے صدر سید فرخ مظہر نے کہا کہ امریکا اور پاکستان کے مابین تعلقات ماضی کی نسبت بہترنظرآتے ہیں اور امریکا کی جانب سے پاکستان کے مختلف شعبوں میں سرمایہ کاری کے عمل کو مزید تیز کیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان میں موجودسرمایہ کاری کے وسیع مواقع کا امریکی سرمایہ کار بھرپورفائدہ اٹھاسکتے ہیں اور پاک امریکا جوائنٹ وینچرز کے ذریعے سرمایہ کاری کی راہ کو ہمواربھی کیا جاسکتا ہے۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔