مشن ورلڈ کپ کی تیاری، ڈومیسٹک کرکٹ کا سہارا لیا جائے گا

اسپورٹس رپورٹر  منگل 21 ستمبر 2021
میلہ23ستمبر سے راولپنڈی میں سجے گا،دوسرے مرحلے میں فائنل سمیت15میچز13اکتوبر تک لاہور میں شیڈول ۔ فوٹو : فائل

میلہ23ستمبر سے راولپنڈی میں سجے گا،دوسرے مرحلے میں فائنل سمیت15میچز13اکتوبر تک لاہور میں شیڈول ۔ فوٹو : فائل

 لاہور: مشن ورلڈکپ کی تیاری کیلیے ڈومیسٹک کرکٹ کا سہارا لیا جائے گا جب کہ میگا ایونٹ کیلیے منتخب تمام کرکٹرز نیشنل ٹی ٹوئنٹی کپ میں اپنی ایسوسی ایشنز کی نمائندگی کریں گے۔

پاکستان نے نیوزی لینڈ اور انگلینڈ کیخلاف ٹی ٹوئنٹی سیریز کیلیے وہی اسکواڈ منتخب کیا تھا جسے بعد ازاں ورلڈکپ میں بھی حصہ لینا ہے، مقصد یہی تھا کہ میگا ایونٹ کے میزبان یواے ای سے ملتی جلتی ہوم کنڈیشنز میں 7میچز کھیلتے ہوئے پلیئنگ الیون کا درست کمبی نیشن بنالیا جائے،اگر ضرورت ہوتو 1، 2 تبدیلیوں کے موقع سے بھی فائدہ اٹھایا جائے۔

نیوزی لینڈ کی ٹیم نے سیکیورٹی کا بے بنیاد جواز پیش کرتے ہوئے سیریز کھیلنے سے انکار کیا تو انگلینڈ کے دورئہ پاکستان پر بھی سوالیہ نشان لگ گیا،اس صورتحال میں پی سی بی نے قومی کرکٹرز کے لیے نئی مصروفیت تلاش کر لی،نیشنل ٹی ٹوئنٹی کپ کا ملتان میں 25 ستمبر کو آغاز ہونا تھا۔

اب ایونٹ 23ستمبر سے شروع ہوگا اور اس میں ورلڈکپ اسکواڈ کے تمام کھلاڑی ایکشن میں نظر آئیں گے، پہلا مرحلہ یکم اکتوبر تک راولپنڈی میں مکمل ہوگا اور18 میچز کھیلے جائیں گے، بعد ازاں فائنل سمیت باقی 15 میچز 6سے 13اکتوبر تک لاہور میں شیڈول ہیں۔

افتتاحی روز پہلا معرکہ بلوچستان اور ناردرن، دوسرا خیبر پختونخوا اور سینٹرل پنجاب کے مابین ہوگا، بابراعظم سینٹرل پنجاب کی قیادت کریں گے، شاداب خان ناردرن کی کمان سنبھالیں گے،امام الحق بلوچستان، سرفراز احمد سندھ، محمد رضوان دفاعی چیمپئن خیبرپختونخوا اور صہیب مقصود سدرن پنجاب کے کپتان ہوں گے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ پی سی بی ڈومیسٹک ایونٹ میں چند غیر ملکی کرکٹرز کی شمولیت ممکن بنانے کیلیے بھی کوشاں ہے،اس ضمن میں رابطے کیے جا رہے ہیں، یاد رہے کہ انگلش ٹیم کو پاکستان کا دورہ کرتے ہوئے 2ٹی ٹوئنٹی میچز 13اور 14اکتوبر کو کھیلنا ہیں،نیوزی لینڈکے انکار پرانگلینڈ  نے اپنے ٹور کا فیصلہ 48گھنٹے میں کرنے کا عندیہ دیا تھا،پی سی بی نے انھیں قائل کرنے کیلیے بھرپور کوشش کی اور تاحال جواب کا منتظر ہے۔

دریں اثناء ذرائع کا کہنا ہے کہ نیشنل ٹی ٹوئنٹی کپ میں شائقین کو بھی پنڈی کرکٹ اسٹیڈیم میں داخلے کی اجازت ہوگی، پی سی بی کیویز کے فیصلے سے ویران ہونے والے میدان کی رونقیں بحال کرکے دنیا کو دکھانا چاہتا ہے کہ پاکستان میں سیکیورٹی کا کوئی مسئلہ نہیں ہے، اسی لیے نیوزی لینڈ سے سیریز کے لیے لگائی جانے والی کرسیاں بھی نہیں ہٹائی گئی ہیں۔

30ستمبر تک کے میچز میں اسٹیڈیم میں 25 فیصد شائقین کو داخلے کی اجازت ہوگی، تعداد بڑھانے کا فیصلہ این سی او سی کرے گا، اسٹیڈیم میں صرف ویکسی نیٹڈ افراد ہی آ سکیں گے، تماشائیوں کو ماسک کے استعمال سمیت ایس اوپیز پر سختی سے عمل درآمدکرنا ہوگا۔ میچز کے دوران عمومی اور بائیو سیکیورٹی کا ذمہ دار پی سی بی ہوگا۔

چیئرمین رمیز راجہ کا کہنا ہے کہ نیوزی لینڈ کیخلاف سیریز کی منسوخی پر نیشنل ٹی ٹوئنٹی کپ قومی کھلاڑیوں کوصلاحیتوں کے بھرپور اظہار کا موقع فراہم کررہا ہے، ملک کے بہترین کرکٹرز کی شرکت سے ٹورنامنٹ کی اہمیت بڑھ جائے گی، نوجوان پلیئرز کو سینئرز کے ساتھ ڈریسنگ روم شیئرکرنے کا موقع بھی ملے گا۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔