طالبان کا داعش کیخلاف کریک ڈاؤن آپریشن، جنگجوؤں سمیت 8 افراد ہلاک

ویب ڈیسک  پير 15 نومبر 2021
آپریشن میں 10 داعش جنگجوؤں کو حراست میں بھی لیا گیا، فوٹو: فائل

آپریشن میں 10 داعش جنگجوؤں کو حراست میں بھی لیا گیا، فوٹو: فائل

کابل: طالبان نے ملک میں ہونے والے خودکش حملوں کی ذمہ داری قبول کرنے والی تنظیم داعش خراسان کے ٹھکانوں پر کریک ڈاؤن آپریشن کیا جس کے دوران 5 داعش جنگجو سمیت 8 افراد ہلاک ہوگئے جب کہ 10 کو گرفتار کرلیا گیا۔

عالمی خبر رساں ادارے کے مطابق طالبان نے قندھار کے چار اضلاع میں داعش خراسان کے ٹھکانوں پر کریک ڈاؤن آپریشن کیا۔ دو طرفہ ہونے والی فائرنگ کے نتیجے میں داعش کے 5 جنگجو ہلاک ہوگئے جب کہ 10 کو حراست میں لے لیا گیا۔

کریک ڈاؤن آپریشن کے دوران طالبان کو بھاری تعداد میں اسلحہ اور گولہ بارود بھی ملا ہے۔ یہ کارروائی داعش خراسان کی جانب سے افغانستان میں امام بارگاہوں اور ایک ملٹری اسپتال میں حملے کی ذمہ داری قبول کرنے کے بعد کی گئی ہے۔

یہ خبر پڑھیں : افغانستان میں نماز جمعہ کے دوران مسجد میں دھماکا، 100 افراد جاں بحق 

اس حوالے سے قندھار میں طالبان کے صوبائی پولیس سربراہ عبدالغفار محمدی نے بتایا کہ 4 داعش جنگجوؤں کی ہلاکت کے بعد ایک جنگجو نے اپنے گھر میں خود کو دھماکے سے اُڑا لیا۔

یہ خبر بھی پڑھیں : افغانستان میں نماز جمعہ کے دوران مسجد میں دھماکا، 47 افراد جاں بحق 

دوسری جانب طالبان انٹیلی جنس ایجنسی کے ایک رکن نے نام نہ ظاہر کرنے کی شرط پر اے ایف پی کو بتایا کہ آپریشن کے دوران 3 شہری بھی ہلاک ہوئے ہیں۔ طالبان کی جانب سے ہلاک ہونے والے داعش جنگجوؤں کی شناخت ظاہر نہیں کی گئی ہے۔

یہ بھی پڑھیں : افغانستان؛ فوجی اسپتال پر حملے میں اہم طالبان کمانڈر سمیت 30 افراد جاں بحق 

واضح رہے کہ افغانستان میں طالبان کے اقتدار سنبھالنے کے بعد سے داعش خراسان نے امام بارگاہوں، مسافر بس، طالبان کے سیکیورٹی قافلوں اور ملٹری اسپتال پر حملے میں کابل کے سیکیورٹی چیف کو شہید کرنے کی ذمہ داری قبول کی تھی۔

 

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔