شمالی وزیرستان میں نامعلوم افراد کی فائرنگ سے طالبان رہنما عصمت اللہ شاہین 3ساتھیوں سمیت ہلاک

ویب ڈیسک  پير 24 فروری 2014
حکیم اللہ محسود کی ہلاکت کے بعد عصمت اللہ شاہین بیٹنی نے تخریک طالبان پاکستان کی مرکزی شوری کے امیر کی حیثیت سے خدمات سرانجام دیں تھیں  فوٹو: اے ایف پی

حکیم اللہ محسود کی ہلاکت کے بعد عصمت اللہ شاہین بیٹنی نے تخریک طالبان پاکستان کی مرکزی شوری کے امیر کی حیثیت سے خدمات سرانجام دیں تھیں فوٹو: اے ایف پی

شمالی وزیرستان: میرانشاہ میں گاڑی پر نامعلوم افراد کی فائرنگ سے  طالبان رہنما عصمت اللہ شاہین بیٹنی اپنے 3ساتھیوں سمیت ہلاک ہوگئے۔

ایکسپریس نیوز کے مطابق شمالی وزیرستان کی تحصیل میرانشاہ کے علاقے درگاہ منڈی میں نامعلوم افراد ایک گاڑی پر فائرنگ کرکے فرار ہوگئے، فائرنگ سے گاڑی میں موجود 4 افراد موقع پر ہی ہلاک ہوگئے۔ لاشوں کو اسپتال منتقل کردیا گیا جہاں  ہلاک افراد میں سے ایک کی شناخت تحریک طالبان کےعصمت اللہ شاہین بیٹنی کے نام سے ہوئی ہے جبکہ دیگر افراد ان کے ساتھی تھے۔ تاہم اب تک تحریک طالبان پاکستان کی جانب سے ان کی ہلاکت کی تصدیق یا تردید نہیں کی۔

واضح رہے کہ گزشتہ برس امریکی ڈرون حملے کے نتیجے میں حکیم اللہ محسود کی ہلاکت کے بعد عصمت اللہ شاہین بیٹنی نے نئے امیر کے تقرر تک تخریک طالبان پاکستان کی مرکزی شوری کے امیر کی حیثیت سے خدمات سرانجام دیں تھیں۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔