پنجاب میں قیدیوں کی سزاؤں میں 60 دن کمی کا اعلان

ویب ڈیسک  جمعرات 7 اپريل 2022
سزاؤں میں کمی کا اطلاق ان تمام قیدیوں پرہوگا جو رواں سال جیل قوانین کی خلاف ورزی میں ملوث نہیں ہوں گے۔ فوٹو:فائل

سزاؤں میں کمی کا اطلاق ان تمام قیدیوں پرہوگا جو رواں سال جیل قوانین کی خلاف ورزی میں ملوث نہیں ہوں گے۔ فوٹو:فائل

لاہور: رمضان کی مناسبت سے پنجاب میں قیدیوں کی سزاؤں میں 60 دن کمی کا اعلان کردیا گیا۔

ایکسپریس نیوز کے مطابق وزیرِاعلی پنجاب عثمان بزدار کی ہدایت پر آئی جی جیل خانہ جات پنجاب مرزا شاہد سلیم بیگ نے رمضان المبارک  کی مناسبت سے پنجاب بھر کی جیلوں میں مقید افراد کے لیے 60 دن کی سزاؤں میں کمی کا اعلان کیا ہے۔

سزاؤں میں کمی پاکستان پریزن رولز 1978ء کے رول 216 کے تحت کی گئی ہے اور اس کا اطلاق ان تمام قیدیوں پر ہوگا جو رواں سال جیل قوانین کی خلاف ورزی میں ملوث نہ ہوں گے۔

سزاؤں میں کمی کا اطلاق دہشت گردی، منشیات اور حدود آرڈی ننس کی دفعات کے تحت سزا ہونے والے قیدیوں پر نہیں ہوگا، مالی غبن اور قومی خزانے کو نقصان پہنچانے والے قیدی بھی اس ریلیف سے استفادہ نہیں کرسکتے۔

اس اعلان کے تحت 150 قیدیوں کو سزاؤں میں کمی کے طور پر فائدہ پہنچا ہے اور ان قیدیوں اور ان کے ورثاء  نے خوشی کا اظہار کیا ہے۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔