والدین نے بیٹے اور بہو پر جلد بچہ پیدا کرنے کیلیے مقدمہ کردیا

ویب ڈیسک  جمعرات 12 مئ 2022
مدعی والدین، [فائل-فوٹو]

مدعی والدین، [فائل-فوٹو]

ایک بھارتی جوڑے نے اپنے اکلوتے بیٹے اور اس کی بیوی کے خلاف مقدمہ دائر کیا ہے جس میں مطالبہ کیا گیا ہے کہ وہ ایک سال کے اندر بچہ پیدا کریں یا 5 کروڑ روپے ہرجانہ ادا کریں۔

ریٹائرڈ سرکاری ملازم 62 سالہ سنجیو پرساد سنہا اور ان کی اہلیہ سادھنا پرساد سنہا کا کہنا ہے کہ انہوں نے اپنے بیٹے پر اپنی زندگی بھر کی کمائی خرچ کردی، جس میں 65,000 ڈالر کا پائلٹ ٹریننگ کورس اور تھائی لینڈ کے فائیو اسٹار ہوٹل میں شادی کا انعقاد بھی شامل ہے۔

بھارتی ریاست اتراکھنڈ کے سے تعلق رکھنے والے جوڑے نے بتایا کہ انہوں نے اپنے بیٹے 35 سالہ ساگر سنہا اور اس کی اہلیہ 31 سالہ شوبھانگی سنہا سے صرف اتنی گزارش کی تھی کہ وہ انہیں ایک پوتا یا پوتی دیں، جو وہ دینے میں ناکام رہے۔

جوڑے نے عدالت کو جمع کرائی گئی درخواست میں کہا کہ ہم نے اس (بیٹے) کی پرورش کے لیے اپنے خوابوں کو مار ڈالا۔ ہم نے اس کی تعلیم کے لیے 20 لاکھ روپے کا قرض بھی لیا۔ لیکن ہماری تمام تر کوششوں کے باوجود ہمارے بیٹے اور بہو نے ہمیں پوتا/پوتی نہ دے کر ذہنی اذیت دی ہے۔ معاشرہ بھی ہمیں سوالیہ نظروں سے دیکھتا ہے جس سے مزید تکلیف ہوتی ہے۔

والدین کے وکیل ارویند کمار سریواستو کا کہنا تھا کہ جوڑے نے اپنے بیٹے کی پیدائش سے لے کر اب تک اُس پر ڈھائی کروڑ خرچ کردیے ہیں۔ اب وہ پوتا یا پوتی پیدا نہ ہونے پر بیٹے سے تمام اخراجات واپس کرنے کا مطالبہ کررہے ہیں جبکہ اس کے علاوہ مزید ڈھائی کروڑ بطور زرِ تلافی کا بھی مطالبہ کیا ہے۔

 

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔