الجزیرہ کا اسرائیلی فوج کے ہاتھوں اپنی صحافی کے قتل پرعالمی عدالت جانے کا فیصلہ

ویب ڈیسک  جمعـء 27 مئ 2022
الجزیرہ کی خاتون صحافی کو 11 مئی کو قتل کیا گیا تھا، فوٹو: فائل

الجزیرہ کی خاتون صحافی کو 11 مئی کو قتل کیا گیا تھا، فوٹو: فائل

دوحہ: قطر کے نشریاتی ادارے ’’الجزیرہ‘‘ نے اسرائیلی فوج کی گولی سے ہلاک ہونے والی خاتون صحافی شیریں عاقلہ کے قتل پر جرائم کی عالمی عدالت جانے کا فیصلہ کرلیا۔

قطر کے نشریاتی ادارے ’’الجزیرہ‘‘ کے مطابق خاتون صحافی شیریں ابو عاقلہ کے کیس پر اپنی قانونی ٹیم کو جرائم کی عالمی عدالت سے رجوع کرنے کی ہدایت کردی ہے۔ اس سلسلے میں عالمی ماہرین سے بھی مشاورت کی گئی ہے۔

الجزیرہ کی جانب سے جاری بیان میں مؤقف اختیار کیا گیا ہے کہ مقتول صحافی کا معاملہ عالمی فوجداری عدالت کے چارٹر کے آرٹیکل 8 کے تحت جنگی جرم ہے جو جنگ زدہ یا مقبوضہ علاقوں میں کام کرنے والے صحافیوں کو تحفظ فراہم کرتا ہے۔

بیان میں یہ بھی بتایا گیا ہے کہ الجزیرہ مئی 2021 کو غزہ میں اسرائیلی فوج کی بمباری میں دفتر کی مکمل تباہی کو بھی عالمی عدالت میں اٹھائے گا۔

یاد رہے کہ الجزیرہ کے لیے کام کرنے والی ممتاز خاتون صحافی ابو شیریں عاقلہ 11 مئی کو مقبوضہ مغربی کنارے میں اسرائیلی فوج کی ایک چھاپہ کارروائی کی کوریج کررہی تھیں جس کے دوران قابض فورس کے اہلکار نے انھیں گولی مار کر ہلاک کردیا تھا۔

 

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔