غیر قانونی تعمیرات میں ملوث افراد کیخلاف مقدمات درج کرانے کا فیصلہ

اسٹاف رپورٹر  جمعرات 2 جون 2022
جوبلڈنگ بغیرنقشے،بلڈنگ پلان اپروول یاایس بی سی اے رولزکیخلاف تعمیرہوگی اس پرایف آئی آرکاٹی جائے گی،احکامات جاری۔ فوٹو : فائل

جوبلڈنگ بغیرنقشے،بلڈنگ پلان اپروول یاایس بی سی اے رولزکیخلاف تعمیرہوگی اس پرایف آئی آرکاٹی جائے گی،احکامات جاری۔ فوٹو : فائل

 کراچی:  کراچی میں غیرقانونی تعمیرات میں ملوث افراد کے خلاف بڑے پیما نے پر کارروائی کا فیصلہ کرلیا گیا۔

ڈائریکٹر جنرل سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی اسحاق کھوڑو نے شہر میں غیرقانونی تعمیرات میں ملو ث افراد کے خلاف کارروائی کا فیصلہ کرلیا ہے۔ ڈی جی ایس بی سی اے نے کمیٹی تشکیل دی ہے جس میں شہر کے تمام7 اضلاع کے اہم افسران کو جن کا تعلق ایس بی سی اے سے ہے اس کمیٹی میں شامل کیا گیا ہے تا کہ وہ اپنے اپنے اضلاع کی نگرانی کریں اور جو عناصر غیرقانونی تعمیرات میں ملوث ہیں ان کے خلاف ایف آئی آر درج کرائیں۔

کمیٹی میں جمیل میمن، محمد ضیاٰ، انجینئر اسماعیل، زیغم حیدر، شیخ محمد شاہد، عاصم انصاری، احسن ادریس کو شامل کیا گیا ہے ڈی جی ایس بی سی اے کی نئی حکمت عملی کے تحت غیرقانونی تعمیرات میں ملوث افراد ، بلڈنگ مالک کے خلاف اب ایف آئی آر درج ہوگی۔

ڈی جی ایس بی سی اے نے افسران کو ضلعی انتظامیہ کے ساتھ ملکر ایف آئی آر درج کرانے کے احکامات دے دیے ہیں، جو بلڈنگ بغیر نقشے، بلڈنگ پلان اپروول یا ایس بی سی اے رولز کے خلاف تعمیر کی جائے گی، اس پر ایف آئی آر کاٹی جائے گی، مافیا کے خلاف ایف آئی آر درج کرانے کے لیے کراچی کے 7 اضلاع میں افسران بھی تعینات کردیے گئے ہیں افسران اپنے اضلاع کا دورہ کریں گے اور غیرقانونی تعمیرات پر رپورٹ بنا کر متعلقہ تھانوں میں ایف آئی درج کرائیں گے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ اس وقت کراچی میں ہزاروں کی تعداد میں غیرقانونی تعمیرات کی جارہی ہیں ان کے خلاف بنائی گئی کمیٹی کس حد تک کارآمد ثابت ہوگی۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔