وزیراعظم کی احتساب عدالت میں مستقل حاضری سے معافی کا حکم نامہ جاری

ویب ڈیسک  ہفتہ 2 جولائ 2022
عدالت نے تین صفحات پر مشتمل فیصلہ جاری کردیا (فوٹو فائل)

عدالت نے تین صفحات پر مشتمل فیصلہ جاری کردیا (فوٹو فائل)

 لاہور: احتساب عدالت نے وزیراعظم شہباز شریف کی رمضان شوگر ملز ریفرنس میں مستقل حاضری سے معافی کا تحریری حکم نامہ جاری کردیا۔

تین صفحات پر مشتمل حکم نامے میں احتساب عدالت کے جج محمد ساجد علی اعوان نے فیصلہ دیا کہ شہباز شریف 2021ء سے باقاعدگی سے عدالت میں پیش ہوتے رہے ہیں۔ اب شہباز شریف وزیر اعظم پاکستان بن چکے ہیں اور آئینی ذمے داریاں ادا کرنی ہیں ۔ یہ حقیقت ہے کہ شہباز شریف کا ہر پیشی پر عدالت پیش ہونا مشکل ہے۔

یہ خبر بھی پڑھیے: رمضان شوگر ملز کیس؛ وزیراعظم کی حاضری سے مستقل استثنا کی درخواست منظور

فیصلے میں مزید کہا گیا ہے کہ شہباز شریف کی غیر موجودگی میں  ٹرائل میں کوئی رکاوٹ حائل نہیں ہوگی۔ تمام حقائق اور حالات کے پیش نظر شہباز شریف کی مستقل حاضری سے معافی کی درخواست منظور کی جاتی ہے  تاہم شہباز شریف کا ذاتی حیثیت میں جب پیش ہونا عدالت کو درکار ہوگا تو وہ پیش ہونے کے پابند ہوں گے۔

عدالت نے شہباز شریف کی جانب سے ان کے نمائندے محمد نواز ایڈووکیٹ کو حاضری کے لیے  مقرر کرلیا۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔