حافظ نعیم کا کراچی میں لوڈشیڈنگ اور بلدیاتی مسائل کے حل کیلئے تحریک کا اعلان

ویب ڈیسک  منگل 16 اگست 2022
الیکشن کمیشن کی جماعت اسلامی سے معذرت کا خیر مقدم کرتے ہیں، حافظ نعیم
 (فوٹو فائل)

الیکشن کمیشن کی جماعت اسلامی سے معذرت کا خیر مقدم کرتے ہیں، حافظ نعیم (فوٹو فائل)

 کراچی: حافظ نعیم الرحمن نے شہر قائد میں بلدیاتی مسائل کے حل اور بڑھتی لوڈ شیڈنگ پر تحریک کا اعلان کردیا۔

امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن نے شہر کی بدترین صورتحال اور لوڈ شیڈنگ کے حوالے سے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ اس وقت شہر کی بدترین صورتحال ہے، شاہراہوں پر بڑے بڑے گڑھے پڑ چکے ہیں، لوگوں میں کمر درد اور ریڑھ کی ہڈی کے مسائل پیدا ہوچکے ہیں، شہر میں پبلک ٹرانسپورٹ نہیں ہے، سیاسی بنیادوں پر بھرتی ایڈمنسٹریٹر روزانہ سوشل میڈیا سیشن کروانے آجاتے ہیں، سندھ حکومت نے کراچی والوں کو عذاب میں مبتلا کر رکھا ہے، ڈیم بھر ہونے کے باوجود شہر میں پانی کی قلت ہے۔

حافظ نعیم الرحمن نے کے الیکٹرک کو لگام دو تحریک کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ کے الیکٹرک کے خلاف اب اہل کراچی کو نکلنا پڑے گا، 21 اگست کو یونیورسٹی روڈ پر عظیم الشان حق دو کراچی مارچ کیا جائے گا اور اہل کراچی اپنے مستقبل کا فیصلہ سنا دیں گے، شدید لوڈ شیڈنگ نے لوگوں کا جینا دوبھر کر رکھا ہے۔

حافظ نعیم الرحمن کا کہنا تھا کہ ضمنی انتخاب کی وجہ سے سب کے کراچی کے دورے شروع ہوجاتے ہیں، کراچی کے لوگوں کو ضمنی انتخاب سے کیا ملے گا؟، سب سے زیادہ ضروری اس وقت بلدیاتی انتخابات ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ کل الیکشن کمیشن نے خط کے ذریعے جماعت اسلامی پر الزام پر معذرت کی، ہم ان کی معذرت کا خیر مقدم کرتے ہیں، مگر اس سوال کا جواب دیں کہ بلدیاتی انتخابات ایک ماہ سے زائد کے لیے کیوں ملتوی کیے، جو بیلٹ پیپرز چھاپے گئے اور آر اوز تک پہنچا دئیے گئے وہ محفوظ نہیں ہیں، الیکشن کمیشن دوبارہ سے بیلٹ پیپرز چھاپے، نئے رنگوں میں بیلٹ پیپرز چھاپے جائیں، ہمارا مطالبہ ہے کہ بلدیاتی انتخابات کے لیے فوج اور رینجرز کو تعینات کیا جائے۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔