محمد حسنین کا معاملہ، آئی سی سی کی خاموشی پرشور مچنے لگا

اسپورٹس ڈیسک  جمعرات 18 اگست 2022
شعیب اختر نے چکنگ کا الزام لگانے والے اسٹوئنس کو بھی کھری کھری سنا دیں (فائل فوٹو)

شعیب اختر نے چکنگ کا الزام لگانے والے اسٹوئنس کو بھی کھری کھری سنا دیں (فائل فوٹو)

کراچی: قومی کرکٹ ٹیم کے نوجوان فاسٹ بولر محمد حسنین کے معاملے میں آئی سی سی کی خاموشی پر شور مچنے لگا۔

دی ہنڈرڈ ٹورنامنٹ میں سدرن بریوو اور اوول انونسیبلز کے درمیان میچ میں محمد حسنین نے جب آسٹریلوی کرکٹر مارکس اسٹوئنس کو آؤٹ کیا تو پویلین واپس جاتے ہوئے بیٹر نے بازو کو گھماکر تاثر دیا کہ پاکستانی فاسٹ بولرنے چکنگ کی، ان کی بولنگ غیرقانونی ہے،اس اشارے پر شائقین کرکٹ کی جانب سے شدید ردعمل کا اظہار کیا گیا۔

بعد ازاں میچ ریفری نے اسٹوئنس سے بات تو کی مگر کوڈ آف کنڈکٹ کی خلاف ورزی کا چارج عائد نہیں کیا، اس معاملے پر آئی سی سی کی خاموشی پر کافی تنقید ہورہی ہے، سب سے بھرپور انداز میں دونوں کے خلاف ردعمل سابق پاکستانی اسپیڈ اسٹار شعیب اختر کی جانب سے سامنے آیا، انھوں نے نہ صرف اسٹوئنس کی حرکت کو شرمناک قرار دیا بلکہ آئی سی سی سے معاملے کا نوٹس لینے کا بھی مطالبہ کیا۔

مزید پڑھیں: مارکس اسٹوئنس نے محمد حسنین کی بولنگ پراعتراض جڑ دیا

سوشل میڈیا پرشعیب اختر نے کہاکہ یہ اسٹوئنس کی جانب سے حسنین کے بولنگ ایکشن کے حوالے سے ایک شرمناک حرکت تھی، اسے ایسا کرنے کی جرات کیسے ہوئی، اس معاملے میں آئی سی سی خاموش ہے، اگر کلیئر قرار دیا جاچکا تو کسی کو بھی ان کے خلاف ایسی باتیں کرنے کا کوئی حق نہیں ہے۔

یاد رہے کہ محمد حسنین بولنگ ایکشن غیرقانونی قرار پانے کے بعد سخت محنت سے اپنے بازو کا خم درست کرکے آئی سی سی سے ٹاپ لیول پر بولنگ کی کلیئرنس حاصل کرچکے ہیں ، دی ہنڈرڈ ٹورنامنٹ کے دوران کسی بھی امپائر کی جانب سے ایکشن پر اعتراض سامنے نہیں آیا ہے۔

 

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔