جماعت اسلامی کی کراچی میں فوری بلدیاتی انتخابات کی درخواست پر الیکشن کمیشن کو نوٹس

کورٹ رپورٹر  جمعرات 1 ستمبر 2022
عدالت نے چیف سیکرٹری سندھ اور محکمہ موسمیات کو بھی نوٹس جاری کردیے (فوٹو فائل)

عدالت نے چیف سیکرٹری سندھ اور محکمہ موسمیات کو بھی نوٹس جاری کردیے (فوٹو فائل)

 کراچی: سندھ ہائیکورٹ نے جماعت اسلامی کی بلاتاخیر بلدیاتی انتخابات کرانے سے متعلق درخواست پر الیکشن کمیشن، چیف سیکرٹری سندھ اور محکمہ موسمیات کو نوٹس جاری کردیے۔

چیف جسٹس سندھ ہائیکورٹ جسٹس احمد علی شیخ کی سربراہی میں 2 رکنی بینچ کے روبرو جماعت اسلامی کی  بلاتاخیر بلدیاتی الیکشن کرانے سے متعلق درخواست کی سماعت ہوئی۔ درخواست گزار کے وکیل عثمان فاروق ایڈووکیٹ نے مؤقف دیا کہ سندھ حکومت جان بوجھ کر حلقہ بندیوں کا عمل تاخیر کا شکار بنارہی ہے۔

درخواست میں کہا گیا کہ ایم کیو ایم اور تحریک انصاف  نے بلدیاتی الیکشن ملتوی کرانے کے لیے دباؤ ڈالا۔ بلدیاتی نظام نہ ہونے کی وجہ سے کراچی کا حال بدترین ہے۔ اس سلسلے میں عدالت میں درخواستیں دائر کی گئیں جو مسترد کردی گئیں۔  عدالت نے الیکشن کمیشن، چیف سیکرٹری سندھ اور محکمہ موسمیات کو نوٹس جاری کرتے ہوئے فریقین سے 16 ستمبر کو جواب طلب کرلیا۔

سیکرٹری جنرل جماعت اسلامی کراچی منعم ظفر اور پبلک ایڈ کمیٹی کے سیف الدین نے دائر درخواست میں مؤقف اپنایا تھا کہ الیکشن کمیشن نے واضح کہا تھا کہ کراچی میں الیکشن شیڈول کے مطابق ہوں گے۔ 24 اگست کو سندھ حکومت کی درخواست پر الیکشن کمیشن نے موسمی صورت حال کی وجہ سے الیکشن ملتوی کردیے۔

درخواست میں عدالت سے استدعا کی گئی ہے کہ الیکشن کمیشن کی جانب سے بلدیاتی انتخابات ملتوی کرنے کا 24 اگست کا نوٹیفکیشن کالعدم قرار دے کر کراچی میں  بلدیاتی الیکشن کی فوری تاریخ مقرر کرکے پولنگ کرانے کا حکم دیا جائے۔ الیکشن کمیشن کو بلدیاتی انتخابات کے شیڈول کا اعلان کرنے کی ہدایت بھی کی جائے۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔