فلسطینیوں کی ہلاکت؛ اسرائیلی سپریم کورٹ نے عمر قید کے اسرائیلی مجرم کی اپیل مسترد کردی

ویب ڈیسک  جمعرات 1 ستمبر 2022
—فوٹو: رائٹرز

—فوٹو: رائٹرز

تل ابیب: اسرائیل کی سپریم کورٹ نے 2015 فائر بمننگ میں فلسطینی بچے اور اس کے والدین کے قتل میں عمر قید کے مجرم اسرائیلی آباد کار کی اپیل مسترد کردی۔

عدالت کی جانب سے 25 سالہ اسرائیلی امیربین اولیل کو ستمبر 2020 میں ان ہلاکتوں کے تناظر میں تین مرتبہ عمر قید کی سزا سنائی۔

اسرائیلی سپریم کورٹ کے ججز نے بین اولیل کے “اعتراف”، وقوعہ سے ملنے والے شواہد کا حوالہ دیتے ہوئے اپیل مسترد اور کہا کہ بین اولیل کے اقدامات ’یہودیت کی تمام اخلاقی اقدار کے منافی ہیں‘، ججز نے مزید کہ “دوسرے مذاہب سے نفرت اور نسل پرستی یہودیت کے مطابق نہیں ہے۔”

انہوں نے کہا کہ اس جرم کی ہولناکی کو بیان نہیں کیا جا سکتا۔ خیال رہے کہ جولائی 2015 میں اسرائیلی مقبوضہ مغربی کنارے کے گاؤں دوما میں گھر کو آگ لگنے سے 18 ماہ کا علی دوابشہ جل کر ہلاک ہو گیا تھا۔ اس کے والدین بعد میں زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے انتقال کر گئےتھے۔

 

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔