بلدیاتی انتخابات سے فرار حکمراں جماعتوں کی شکست کی علامت ہے، سراج الحق

اسٹاف رپورٹر  پير 3 اکتوبر 2022
عوام مراعات یافتہ اور حکمران طبقے کے بیچ سینڈوچ بنے ہوئے ہیں، سراج الحق (فوٹو فائل)

عوام مراعات یافتہ اور حکمران طبقے کے بیچ سینڈوچ بنے ہوئے ہیں، سراج الحق (فوٹو فائل)

 کراچی: امیر جماعت اسلامی پاکستان سراج الحق نے کہا ہے کہ کراچی میں حکمران پارٹیوں کی بلدیاتی انتخابات سے راہ فرار کی کوششیں ان کی شکست کی واضح علامت ہے۔

کراچی میں جماعت اسلامی کے تحت بلدیاتی انتخابات کی تیاریوں کے سلسلے میں ورکرز کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے سراج الحق کا کہنا تھا کہ وفاقی و صوبائی حکومتوں کی نا اہلی اور بے حسی کے باعث ملک کا سب سے بڑا شہر اور صوبائی دارالحکومت مسائل کی آماجگاہ اور جرائم کا گڑھ بن چکا ہے۔

امیر جماعت اسلامی کا کہنا تھا کہ شہر قائد کی سڑکیں کھنڈرات میں تبدیل ہو گئی ہیں، عوام کو تعلیم، صحت، ٹرانسپورٹ اور پینے کے صاف پانی جیسی سہولتیں تک میسر نہیں۔ 14سال سے سندھ اور کراچی کو پیپلز پارٹی نے یرغمال بنا رکھا ہے۔ ملک بھر کے عوام مراعات یافتہ اور حکمران طبقے کے بیچ سینڈوچ بنے ہوئے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ حکمرانوں کی نا اہلی کی وجہ سے قومی خزانہ محفوظ ہے نہ توشہ خانہ اور نہ ہی سائفر۔ ساری سیاست جھوٹ اور فریب پر چل رہی ہے،جس میں سچائی کو خوردبین سے بھی تلاش کرنا  مشکل ہے۔سراج الحق نے کہا کہ مسائل کا حل صرف جماعت اسلامی ہے جو اسلامی نظام کے نفاذ اور عدل و انصاف کی علمبردار ہے۔ کنونشن سے امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن،نائب امرا کراچی  ڈاکٹر اسامہ رضی اور ڈاکٹر واسع شاکر نے بھی خطاب کیا۔

سراج الحق نے مزید کہا کہ عالمی منڈی میں تیل قیمتوں میں کمی ہو رہی ہے، ہمارا مطالبہ ہے کہ ملک میں پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں 100روپے فی لیٹر کی کمی کی جائے۔ عوام کو مہنگائی سے نجات دلانے اور حقیقی معنوں میں ریلیف فراہم کرنے کے لیے ٹھوس اقدامات اور عملی اقدامات کیے جائیں۔

امیر جماعت کا کہنا تھا کہ مسئلہ کشمیر، آئی ایم ایف کی غلامی، ایف اے ٹی ایف قوانین اور ٹرانس جینڈر ایکٹ پر یہ سب متفق ہیں، جھگڑا صرف مفادات کے حصول کا ہے۔ عوام کے مسائل و مشکلات اور  بڑھتی ہوئی مہنگائی سے انہیں کوئی سرو کار نہیں۔ ملک اور قوم کو بحرانوں سے نکالنے، مسائل کے حل، انصاف کے حصول اور تحفظ، تعلیم، صحت اور روزگار کی فراہمی، خاندانی نظام کے استحکام اور بین الاقوامی ساہوکاروں سے نجات اور ترقی یافتہ ممالک کی صف میں شامل ہونے کے لیے صرف ایک راستہ ہے کہ ملک میں اسلامی نظام نافذ کیا جائے ۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔