گوگل فار اسٹارٹ اپس؛ پاکستان میں گردشی معیشت کا آغاز

بزنس رپورٹر  بدھ 5 اکتوبر 2022
10 ہفتوں پر مشتمل پروگرام میں گوگل کے انجینئر تکنیکی مدد اور رہنمائی فراہم کریں گے۔ فوٹو: گوگل

10 ہفتوں پر مشتمل پروگرام میں گوگل کے انجینئر تکنیکی مدد اور رہنمائی فراہم کریں گے۔ فوٹو: گوگل

کراچی: گوگل پاکستان، ایشیا پیسیفک اور شمالی امریکا میں، اپنے اسٹارٹ اپس کے لیے ’’ گوگل فار اسٹارٹ اپس: سرکلر اکانومی‘‘ کے نام سے ایک پروگرام کا آغاز کر رہا ہے۔

یہ پروگرام ایسے اداروں کا انتخاب کریگا جو دوبارہ استعمال (reuse)، دوبارہ بھرائی کرنے (refill)، ری سائیکلنگ، کمپوزنگ، فیشن، فوڈ، سیف اینڈ سرکلر میٹیریل اور ماحول کی تعمیر کے لیے ٹیکنالوجی استعمال کرتے ہیں۔

سرکلر اکانومی سے تعلق رکھنے والے سولوشنز متعارف کرانے کی غرض سے ایشیا پیسفک بہترین نقطہ آغاز ہے۔ یہ موسمی تبدیلی کے اثرات کے حوالے سے انتہائی غیر محفوظ خطہ ہے۔ تمام دریاؤں سے سمندر میں پیدا ہونے والے پلاسٹک کا 90 فیصدصرف 10 دریا پیدا کرتے ہیں اور نو میں 8 دریا ایشیا پیسیفک میں بہتے ہیں۔

امکان ہے کہ سنہ 2040ء تک، ایشیا میں پلاسٹک کا استعمال دنیابھر میں استعمال ہونے والے پلاسٹک کے 40 فیصد تک پہنچ جائے گا۔ یہ سیارہ دوبارہ، قدرتی طور پر جس قدر پیدا کر سکتا ہے، انسان اس سے کہیں زیادہ وسائل استعمال کرتا ہے۔

امکان ہے کہ سنہ 2022ء میں وسائل کی عالمی طلب میں، زمین کے ماحولی نظام کے ایک سال میں دوبارہ پیدا کرنے کی گنجائش کے مقابلے میں 1.75گنا زیادہ اضافہ ہو جائے گا۔ ان میں سے زیادہ تروسائل جو ہم حاصل کرتے ہیں اور استعمال کرتے ہیں، ضائع ہو جاتے ہیں۔ اِس طرح ہر سال ٹھوس فضلے کی صورت میں سالانہ 2ارب ٹن سے بھی زیادہ وسائل ضائع ہوتے ہیں۔

امید ہے کہ یہ پروگرام اسٹارٹ اپس کو ایسی سرکلر اکانومی تخلیق کرنے میں مدد کرے گا جو ہر شخص کے لیے زیادہ محفوظ، پائیدار اور مساویانہ ہو اور جو مادی وسائل کے ساتھ ہمارے تعلق کو دوبارہ قائم کر سکے اور چیلنجوں کی گردش کو حل کر سکے۔

1سے1 اور 1سے کئی والے لرننگ سیشنز کے ذریعے یہ ایکسلریٹر پروگرام دس ہفتوں پر مشتمل ورچوئل پروگرامنگ پیش کرتا ہے جس میں گوگل کے انجنیئروں اور بیرونی ماہرین کی جانب سے تکنیکی مدد اور رہنمائی فراہم کی جائے گی۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔