شہروں میں 12، دیہی علاقوں میں 17 گھنٹے لوڈشیڈنگ

آئی این پی  جمعرات 27 مارچ 2014
حکومت کے دعوے دھرے رہ گئے، بجلی کی طلب و رسد کا شارٹ فال2700میگا واٹ ہو گیا۔ فوٹو: فائل

حکومت کے دعوے دھرے رہ گئے، بجلی کی طلب و رسد کا شارٹ فال2700میگا واٹ ہو گیا۔ فوٹو: فائل

لاہور: حکومتی دعوؤں کے باوجود ملک بھر میں لوڈشیڈ نگ میں کمی کے بجائے اضافہ ہوگیا، وزارت پانی وبجلی نے موسم گرما میں معاملات کو کنٹرول میں رکھنے کیلیے پیشگی تیاریاں شروع کر دیں، بجلی کی پیداوار 8600 میگا واٹ جبکہ طلب 11300میگا واٹ تک پہنچ گئی۔

این ٹی ڈی کے ترجمان کے مطابق بدھ کو آئی پی پیز سے 5670میگاواٹ، تھرمل سے 1280اور ہائیڈل سے 1650میگا واٹ بجلی کا حصول ممکن ہو سکا جس کے باعث شارٹ فال 2700میگا واٹ ریکارڈ کیا گیا جبکہ حکومتی اعدادوشمار کے مطابق شارٹ فال 3ہزار کے قریب ہے جس کی وجہ سے غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ بھی شروع کر دی گئی ہے۔ گزشتہ روزمختلف شہری علاقوں میں 9سے 12جبکہ دیہی علاقوں میں 14سے 17گھنٹے تک لوڈشیڈنگ ریکارڈ کی گئی۔ ذرائع کے مطابق وزارت پانی وبجلی نے موسم گرما کی آمد کے پیش نظر اپنی تیاریاں شروع کر دی ہیں لوڈ شیڈنگ کے شیڈول کی ترتیب اور دیگر معاملات کو حتمی شکل دی جارہی ہے۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔