بھارت وچین کی نسبت ترک کیمیکلزکی درآمد کم لاگت میں ممکن

احتشام مفتی  اتوار 27 نومبر 2022
پاکستان کیمیکل مرچنٹس اوراستنبول ایکسپورٹرز ایسوسی ایشن نے ’ایم اویو‘پر دستخط کردیے۔ فوٹو: فائل

پاکستان کیمیکل مرچنٹس اوراستنبول ایکسپورٹرز ایسوسی ایشن نے ’ایم اویو‘پر دستخط کردیے۔ فوٹو: فائل

کراچی: پاکستان کیمیکلز اینڈ ڈائیز مرچنٹس ایسوسی ایشن کے سرپرست اعلیٰ عبدالرحیم چغتائی نے کہا ہے کہ ترکیہ سے ٹیکسٹائل کیمیکلز بھارت اور چین سے کم درآمدی لاگت میں منگوا کر قیمتی زرمبادلہ کی بچت ممکن ہے۔

استنبول میں منعقدہ ترک کیم شو یوریشیا 2022 میں شریک ہونے والے وفد کے سربراہ اور پاکستان کیمیکلز اینڈ ڈائیز مرچنٹس ایسوسی ایشن کے سرپرست اعلی عبدالرحیم چغتائی نے ’’ایکسپریس‘‘ سے بات چیت کے دوران کہا کہ ترکیہ سے ٹیکسٹائل کیمیکلز بھارت اور چین سے کم درآمدی لاگت میں منگوا کر نہ صرف قیمتی زرمبادلہ کی بچت ممکن ہے بلکہ پاکستان کی ٹیکسٹائل انڈسٹری کی ضروریات کو بھی بخوبی پورا کیا جاسکتا ہے۔

انھوں نے بتایا کہ مذکورہ نمائش میں ترکیہ کے مینوفیکچررز کے ساتھ پاکستان کے 20لاکھ ڈالر مالیت کے مختلف نوعیت کے صنعتی کیمیکلز کے درآمدی معاہدے طے پائے ہیں،ملک میں جاری زرمبادلہ بحران کے تناظر میں یہ ضروری ہے کہ کم ترین لاگت میں کیمیکلز و دیگر خام مال درآمد کرکے ملکی برآمدات کو بڑھایا جائے۔

انھوں نے بتایا کہ نمائش کے دوران پاکستان کیمیکلز اینڈ ڈائیز مرچنٹس اور استنبول کیمیکلز اینڈ پراڈکٹس ایکسپورٹرز ایسوسی ایشن کے درمیان منعقدہ اجلاس میں دوطرفہ تجارت بڑھانے اور دونوں ممالک کے نجی شعبوں کے مابین تعاون کے فروغ کے لیے مفاہمت کی ایک یادداشت پر دستخط بھی کیے گئے۔

پاکستانی وفد میں ایف پی سی سی آئی کے سابق نائب صدر ثاقب فیاض مگوں، صدر پی سی ڈی ایم اے عبدالعزیز چغتائی، اسد خان، عبدالغفور، رؤف کھتری و دیگر شامل تھے۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔