مودی سرکار میں ہندو انتہاپسند ہجوم کا ایک اورمسلمان پربہیمانہ تشدد

ویب ڈیسک  پير 5 دسمبر 2022
ہجوم کے تشدد سے شدید زخمی ہونے والے آدم خان کو اسپتال منتقل کردیا گیا:فوٹو:اسکرین گریب

ہجوم کے تشدد سے شدید زخمی ہونے والے آدم خان کو اسپتال منتقل کردیا گیا:فوٹو:اسکرین گریب

نئی دہلی: مودی سرکار میں ہندو انتہاپسندوں کے ہجوم نے ایک اور مسلمان کو بہیمانہ تشدد کا نشانہ بنا ڈالا۔

بھارتی ریاست مہاراشٹر کے ضلع پیلہار میں 27 سالہ آدم خان نام کے مسلمان پر ہندو انتہاپسندوں کے ہجوم نے انسانیت سوز تشدد کیا۔ ہندو انتہاپسند نہتے مسلمان کو ڈنڈے اور لاتوں سے مارتے اور گالیاں بکتے رہے جبکہ کچھ  لوگ ویڈیو بناتے رہے۔

ہجوم نے آدم خان پر زیورات چوری کا الزام لگا کربدترین تشدد کیا۔ آدم خان کے والد کا کہنا ہے کہ ان کا بیٹا وہاں سے گزر رہا تھا جب اچانک ہجوم نے انہیں گھیر لیا اور بہیمانہ تشددکیا۔ آدم خان کو شدید زخمی حالت میں اسپتال منتقل کردیا گیا ہے۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔