امریکی فوج شامی باغیوں کو اردن میں تربیت دے گی

اے ایف پی  اتوار 6 اپريل 2014
 باغیوں کو زمین سے فضا تک مار کرنے والے میزائل فراہم نہیں کیے جائیں گے۔ فوٹو: اے ایف پی/فائل

باغیوں کو زمین سے فضا تک مار کرنے والے میزائل فراہم نہیں کیے جائیں گے۔ فوٹو: اے ایف پی/فائل

بیروت / واشنگٹن: شام کے دارالحکومت دمشق میں مختلف مقامات پر گولی باری کے دوران روسی سفارت خانے کے قریب بھی ایک گولہ آ گرا تاہم اس میںکسی کے زخمی ہونے کی اطلاع نہیں ملی۔

دمشق کے مشرقی علاقے گھوٹامیں حکومتی فوج اور باغیوں میں لڑائی جاری ہے۔ صوبہ ادلیب میں فوجی بیس پرحکومت مخالف فورسزنے قبضہ مزید مضبوط کرلیا ہے۔ دارالحکومت کے علاقہ امیہ اور ہائی سیکیورٹی زون مزرعا میں روسی سفارت خانے کے قریب گولہ باری کی گئی۔ اسی طرح سیکیورٹی کی عمارتوں والے علاقے شوغراور فہامہ میں بھی بمباری کی گئی ہے۔ شہر میں گولہ باری کے17واقعات میں ایک اسپتال، کئی گھراور کاریں تباہ ہو گئیں۔ ادھر ترک سرحد کے قریب صوبہ لتاکیہ میں حکومت مخالف فوج انصارالشام نے سرحدی گاؤں کسب پر قبضہ کا دعویٰ کیا ہے۔ امریکانے شام میں حکومت کے خلاف برسرپیکار باغیوں کی فوج کوہتھیاروں کی سپلائی بڑھانے اور اس عمل میں تیزی لانے کا فیصلہ کیاہے۔

اوباماانتظامیہ شام کے باغیوں کو صدر بشارالاسد کی حکومت کیخلاف لڑنے کے لئے ہتھیاروں کی سپلائی بڑھائے گی جبکہ امریکی فوج اردن کے سرحدی علاقے میں باغیوں کوٹریننگ بھی دے گی۔ تاہم امریکی فوجی ذرائع کے مطابق باغیوں کو زمین سے فضا تک مار کرنے والے میزائل فراہم نہیں کیے جائیں گے۔ امریکاشام میں جنگجو باغیوں کے ذریعے شام کی حکومت کاتختہ الٹنے کے درپے ہے۔ امریکی حکومت نے باغیوں کو جنگی تربیت دینے کابھی فیصلہ کیاہے۔ امریکی فوج اردن  میں باغیوں کوٹریننگ دیگی۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔