ڈالر انٹربینک مارکیٹ میں 285 روپے سے کم  ہوگیا

احتشام مفتی  جمعـء 1 دسمبر 2023
(فوٹو: فائل)

(فوٹو: فائل)

 کراچی: کاروباری ہفتے کے آخری روز انٹربینک مارکیٹ میں ڈالر 285 روپے سے بھی کم کی سطح پر آ گیا۔

حکومت کی جانب سے ترسیلات زر بڑھانے کے اقدامات، زرمبادلہ کے سرکاری ذخائر میں اضافے اور سپلائی میں بہتری کے باعث جمعہ کے روز زرمبادلہ کی دونوں مارکیٹوں میں ڈالر کے مقابلے میں روپیہ تگڑا رہا۔

کاروباری ہفتے کے آخری دن ڈالر انٹربینک ریٹ 285روپے سے نیچے آگئے جب کہ اوپن ریٹ بھی 286 روپے کی سطح پر آگئے۔ کاروباری دورانیے میں انٹربینک مارکیٹ میں ڈالر کی قدر ایک موقع پر 66 پیسے کی کمی سے 284روپے 50 پیسے کی سطح پر بھی آگئی تھی تاہم رسد بہتر ہونے کے باعث غیرملکی کمپنیوں کی زرمبادلہ میں منافع اپنے ہیڈ کوارٹرز بھیجنے کے دباؤ سے کاروبار کے اختتام پر انٹربینک مارکیٹ میں ڈالر کی قدر 20پیسے کی کمی سے 284روپے 96پیسے پر بند ہوئی۔

اسی طرح اوپن کرنسی مارکیٹ میں بھی ڈالر کی قدر مزید 50پیسے کی کمی سے 286 روپے پر بند ہوئی۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ ایف بی آر کی آئی ایم ایف کے مقررہ ریونیو ہدف سے زائد کی ٹیکس وصولیوں سے اس بات کا اندازہ ہورہا ہے کہ ملک میں کوئی نیا منی بجٹ نہیں آئے گا جس سے بالواسطہ طور پر روپے کو سپورٹ ملے گی جب کہ سعودی عرب کی پاکستان کے لیے 3ارب ڈالر کے ڈپازٹ ایک سال کی مؤخر ادائیگیوں کی سہولت ملنے، خلیجی ممالک کی پاکستان میں اربوں ڈالر کی سرمایہ کاری معاہدوں سے مستقبل میں نئے انفلوز آنے کی امیدوں اور اچھے سینٹی منٹس سے ڈالر کی نسبت روپیہ کی قدر مستحکم ہوتا نظر آرہا ہے۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔