پولیس نے بین الصوبائی جرائم پیشہ 3 رکنی گروہ گرفتار کرلیا

اسٹاف رپورٹر  جمعـء 30 مئ 2014
جرائم پیشہ گروہ کیخلاف کراچی سمیت سندھ میں 15اور پنجاب میں12مقدمات درج ہیں فوٹو فائل

جرائم پیشہ گروہ کیخلاف کراچی سمیت سندھ میں 15اور پنجاب میں12مقدمات درج ہیں فوٹو فائل

کراچی: اسپیشل انویسٹی گیشن یونٹ پولیس نے گلشن معمار سے خطرناک بین الصوبائی جرائم پیشہ گروہ کے سرغنہ سمیت3 ملزم گرفتار کرلیے۔

ملزمان کارلفٹنگ، اغوا برائے تاوان اور ڈکیتیوں میں ملوث ہیں، یہ بات اسپیشل انویسٹی گیشن یونٹ کے ایس ایس پی فاروق اعوان نے پریس کانفرنس میں بتائی، انھوں نے کہا کہ 29 مئی کی صبح گلشن معمار میں اندرون سندھ کے جرائم پیشہ بین الصوبائی گروہ کے سرغنہ آفتاب ڈھر عرف استاد اس کے 2 کارندوں انور ڈومکی اور ظہیرالدین کو گرفتار کرکے ایک کلاشنکوف ، 2 پستول اور گولیاں برآمد کرلیں۔

گرفتار ملزمان نے بتایا کہ انھوں نے جرائم کا آغاز فیصل آباد میں موٹر سائیکل اور کار لفٹنگ سے کیا اور بعد ازاں رحیم یارخان اور صادق آباد میں وارداتیں کرنے کے بعد کراچی آگئے ، ملزمان نے گزشتہ سال اگست میں درخشاں کی حدود سے ونود مل کو اغوا کیا اور 33 لاکھ روپے اور ڈیفنس سے عطا محمد گھیچی کو اغوا کر کے40لاکھ روپے تاوان وصول کرکے مغویان کو رہا کیا، ملزمان نے مارچ 2014 میں گلستان جوہر شادی لان کے مالک طارق قریشی کو اغوا کر کے50 لاکھ روپے تاوان وصول کیا، ملزم آفتاب ڈھر فیصل آباد اور رحیم یار خان میں ڈکیتی اور کاریں چھیننے کے دوران کئی بار گرفتار ہوچکا ہے۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔