ٹوبہ ٹیک سنگھ میں جعلی پیر کےہاتھوں زیادتی کی شکار لڑکی نے زہریلی گولیاں کھالیں

ویب ڈیسک  جمعـء 30 مئ 2014
میڈیا پر خبر نشر ہونے کے بعد تھانہ رجانہ پولیس نے جعلی پیر کو حراست میں لے لیا۔    فوٹو: فائل

میڈیا پر خبر نشر ہونے کے بعد تھانہ رجانہ پولیس نے جعلی پیر کو حراست میں لے لیا۔ فوٹو: فائل

ٹوبہ ٹیک سنگھ: رجانہ میں جعلی پیر کے ہاتھوں مبینہ زیادتی کا شکار ہونے والی 22 سالہ لڑ کی نے انصاف نہ ملنے پر زہریلی گولیاں کھالیں۔

ایکسپریس نیوز کے مطابق ٹوبہ ٹیک سنگھ کے علاقے رجانہ کے نواحی گاؤں 285 گ ب کی رہائشی عافیہ 2 روز قبل اپنی خالہ کے ساتھ اپنے ہی گاؤں کے رہائشی جعلی پیر محمد اصغر کے آستانے پر گئی جہاں جعلی پیر نے اسے زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا، اس موقع پر لڑکی کے شور مچانے پر اہل علاقہ اکٹھے ہوگئے لیکن بااثر افراد نے لڑکی اور اس کے اہل خانہ کو مقدمہ درج کراونے سے روک دیا اور پنچائیت کے ذریعے معاملہ حل کروانے کی یقین دہانی کروائی۔

پنچائیت میں علاقے کے بااثر افراد لڑکی کو انصاف فراہم کرنے کے بجائے الٹا جعلی پیر کی ہی حمایت کرتے رہے جس پر لڑکی نے زہریلی گولیاں کھالیں جس کےباعث لڑکی کی حالت بگڑگئی اور اسے طبی امداد کے لئے ڈسڑکٹ ہیڈ کواٹر اسپتال ٹوبہ ٹیک سنگھ منتقل کردیا۔ دوسری جانب میڈیا پر خبر نشر ہونے کے بعد تھانہ رجانہ پولیس نے جعلی پیر کو حراست میں لے لیا۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔