اسٹیٹ بینک کو رواں مالی سال 60 ارب روپے کا زائد منافع

بزنس رپورٹر  جمعرات 5 جون 2014
 منافع کا تخمینہ 200 ارب روپے لگایا گیاتھا تاہم اس سال مرکزی بینک نے 260 ارب روپے کا منافع حکومت پاکستان کو منتقل کیا  فوٹو: فائل

منافع کا تخمینہ 200 ارب روپے لگایا گیاتھا تاہم اس سال مرکزی بینک نے 260 ارب روپے کا منافع حکومت پاکستان کو منتقل کیا فوٹو: فائل

اسلام آباد: اسٹیٹ بینک آف پاکستان نے حکومت کے ابتدائی تخمینے سے 60ارب روپے زائد کا منافع منتقل کیا ہے۔

مالی سال 2013-14 کے لیے اسٹیٹ بینک کے منافع کا تخمینہ 200ارب روپے لگایا گیا تھا تاہم اس سال مرکزی بینک نے 260ارب روپے کا منافع حکومت پاکستان کو منتقل کیا آئندہ مالی سال اسٹیٹ بینک کے پرافٹ کا تخمینہ 270ارب روپے لگایا گیا ہے۔ اسٹیٹ بینک آف پاکستان نے بینکوں پر 20لاکھ روپے کے جرمانے بھی عائد کیے، آئندہ مالی سال کے لیے بھی جرمانوں کا تخمینہ 20لاکھ روپے لگایا گیا ہے۔

دوسری جانب غیرمالیاتی اداروں نے بھی حکومتی وسائل بڑھانے میں اہم کردار ادا کیا اورحکومت کو ڈیویڈنڈ کے ذریعے 77ارب 54کروڑ 62 لاکھ روپے کے وسائل مہیا کیے، آئندہ مالی سال غیرمالیاتی اداروں سے ڈیویڈنڈ کے ذریعے آمدن کا تخمینہ 81ارب 98کروڑ روپے لگایا گیا ہے، غیر مالیاتی اداروں میں سے سب سے زیادہ منافع اوجی ڈی سی ایل نے دیا جس کی مالیت 29ارب روپے رہی، دوسرے نمبر پر گورنمٹ ہولڈنگز پرائیوٹ لمیٹڈ رہی جس نے 14ارب روپے کا منافع دیا، پاکستان پٹرولیم لمیٹڈ نے 13ارب 42کروڑ 73 لاکھ روپے کا منافع دیا ، پی ٹی سی ایل نے 6ارب 34کروڑ 21لاکھ روپے، پاک عرب ریفائنری نے 5ارب 40کروڑ روپے، این آئی سی نے 2ارب روپے کا منافع جمع کرایا۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔