نساؤ اسٹیڈیم نیویارک کی پچز؛ بیٹرز کیلئے مقبرہ بن گئیں

موسیٰ غنی  بدھ 12 جون 2024
پاک بھارت میچ سمیت کئی مقابلے لو اسکورننگ رہے، ڈراپ اِن پچز کا آئیڈیا فلاپ (فوٹو: کرک انفو)

پاک بھارت میچ سمیت کئی مقابلے لو اسکورننگ رہے، ڈراپ اِن پچز کا آئیڈیا فلاپ (فوٹو: کرک انفو)

آئی سی سی ٹی20 ورلڈکپ کیلئے نیویارک کے نساؤ کاؤنٹی کرکٹ اسٹیڈیم میں انسٹال کی گئی ڈراپ اَن پچز نے میگا ایونٹ کا مزہ کِرکرا کردیا۔

اس مقام پر ٹورنامنٹ میں اب تک کھیلے گئے 6 میچز میں بیٹنگ کرنے والی ٹیمیں پریشانی کا شکار رہیں، خود آئی سی سی نے بھی اسٹیڈیم کی پچز کو غیر معیاری قرار دیا لیکن اس کے باوجود میچز کروانے سلسلہ جاری ہے۔

پہلی بار ٹورنامنٹ کی میزبانی کرنے والے امریکا میں کھیلے گئے مقابلے شائقین کو اپنی طرف راغب نہ کرسکے، غیرمعیاری پچز نے ٹی20 کا حسن برباد کردیا جبکہ فینز کو اسٹیڈیم باؤنڈریز دیکھنے کے مواقع نہ ہونے کے برابر ملے۔

مزید پڑھیں: آئی سی سی نے نیویارک اسٹیڈیم کی پچ غیر معیاری ہونے کی تصدیق کردی

ابتدائی چھ ٹی20 مقابلوں ہمیں محض 74 چوکے اور 41 چھکے دیکھنے کو ملے جبکہ اس کے برعکس ویسٹ انڈیز میں کھیلے جارہے میچز میں باؤنڈریز حاصل کرنا زیادہ آسان ہے اور وہاں ٹیمیں 200 یا 180 سے زائد رنز اسکور کررہی ہیں۔

دوسری جانب نساؤ کاؤنٹی اسٹیڈیم میں کوئی بھی ٹیم 150 کا عندسہ پار کرنے میں کامیاب نہیں ہوسکی ہے۔

نیویارک میں کھیلے گئے 6 میچز میں ٹیموں کے اسکورز:

پہلا مقابلہ سری لنکا اور جنوبی افریقہ کی ٹیموں کے درمیان ہوا، جس میں لنکن ٹیم محض 19.1 اوورز میں 77 رنز بناکر آل آؤٹ ہوگئی جبکہ افریقی ٹیم نے ہدف 16.2 اوورز میں 4 وکٹوں کے نقصان پر حاصل کیا۔

مزید پڑھیں: ٹی20 ورلڈکپ؛ رضوان نے ایک اور نا پسندیدہ ریکارڈ اپنے نام کرلیا

دوسرا مقابلہ بھارت اور آئرلینڈ کے درمیان کھیلا گیا، جس میں آئرش ٹیم 16ویں اوور میں 96 رنز بناکر آل آؤٹ ہوگئی جبکہ بھارت نے ہدف 2 وکٹوں کے نقصان پر حاصل کرلیا۔

تیسرا میچ جنوبی افریقا اور نیدرلینڈز کے مابین ہوا جس میں اورنج شرٹس محض 20 اوورز میں 9 وکٹوں کے نقصان پر 103 رنز بناسکی، ہدف کے تعاقب می جنوبی افریقی بیٹنگ لائن بھی بمشکل 19ویں اوور میں ٹارگٹ تک پہنچ پائی۔

چوتھا میچ روایتی حریف پاکستان اور بھارت کے درمیان کھیلا گیا اور اس میچ میں خراب موسم اور پچ نے مقابلے کا مزہ کرکرا کردیا۔ پہلے میچ بارش کی وجہ سے تاخیر سے شروع ہوا بعدازاں بھارت کی طویل بیٹنگ لائن اَپ محض 19ویں اوور میں 119 رنز بناکر پویلین لوٹ گئی جبکہ پاکستانی ٹیم بھی ہدف حاصل نہ کرسکی اور 20 اوورز میں 7 وکٹوں کے نقصان پر 113 رنز بناکر میچ 6 رنز سے گنوا بیٹھی۔

مزید پڑھیں: رمیز کے پروگرام میں بمراہ کا مذاق! پھر وکٹ بھی وہیں گنوائی، ویڈیو وائرل

پانچواں میچ اسی گراؤنڈ پر جنوبی افریقہ اور بنگلہ دیش کے درمیان کھیلا گیا جس کا نتیجہ کچھ مختلف نہ تھا، لو اسکورنگ میچ دیکھنے کو ملا۔ افریقی ٹیم نے پہلے بیٹنگ کی اور مقررہ 20 اوورز میں 113 رنز بناسکی، ہدف کے تعاقب میں بنگال ٹائیگرز بھی مشکلات کا شکار رہے اور 20 اوورز میں مھض 109 رنز بناکر میچ 4 رنز سے گنوا بیٹھے۔

چھٹا میچ شکستوں کے بوجھ تلے پاکستانی ٹیم کا کینیڈا سے تھا، یہاں بھی لو اسکورننگ میچ دیکھنے کو ملا، پہلے کینیڈا کی ٹیم 20 اوورز میں 106 رنز تک محدود رہی بعدازاں ہدف کے تعاقب میں پاکستان مشکلات کا شکار رہا۔ پچ پر رنز اسکور کرنا پہاڑ سر کرنے کے مترادف بن گیا، قومی ٹیم 18 ویں اوور میں 107 رنز کا ہدف حاصل کرسکی۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔