افریقی ہاتھی ایک دوسرے کو انفرادی ناموں سے پکارتے ہیں، تحقیق

ویب ڈیسک  منگل 25 جون 2024

ایک نئی تحقیق میں بتایا گیا ہے کہ افریقی ہاتھی ایک دوسرے کو انفرادی ناموں سے پکارتے ہیں اور اس کا جواب دیتے ہیں۔یہ نام ہاتھیوں کی کم آوازوں کا ایک حصہ ہیں جو وہ وسیع میدانوں کے پار طویل فاصلے تک سن سکتے ہیں۔

سائنس دانوں کا ماننا ہے کہ پیچیدہ سماجی ڈھانچے اور خاندانی گروہوں میں رہنے والے جانور جو اکثر بچھڑ جاتے ہیں اور پھر دوبارہ مل جاتے ہیں ان کے یہ انفرادی نام استعمال کرنے کے امکان زیادہ ہوتے ہیں۔

جنگلی جانوروں کا ایک دوسرے کو منفرد ناموں سے پکارنا انتہائی نایاب امر ہے۔ انسانوں کے علاوہ کتے ناموں کی پہچان رکھتے ہیں ڈولفن کےبچے اپنے نام خود بنا لیتے ہیں، جسے سِگنیچر وسلز کہا جاتا ہے، اور طوطے بھی نام استعمال کرسکتے ہیں۔

ان میں سے ہر نام رکھنے والے جانور اپنی پوری زندگی میں منفرد نئی آوازیں سیکھنے کی صلاحیت بھی رکھتے ہے اور یہ نایاب صلاحیت ہاتھیوں کے پاس بھی ہوتی ہے۔

نیچر ایکولوجی اینڈ ایوولوشن میں شائع ہونے والے مطالعے میں ماہرین حیاتیات نے مشین لرننگ کا استعمال کیا تاکہ کینیا کے سمبورو نیشنل ریزرو اور امبوسیلی نیشنل پارک میں ریکارڈ کی گئی سوانا ہاتھیوں کی آوازوں کی ایک صوتی لائبریری میں ناموں کے استعمال کا پتہ لگایا جا سکے۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔