پاکستانی شہری کی بھارتی فوج کے ہاتھوں ہلاکت

ایڈیٹوریل  اتوار 10 اگست 2014
بھارتی سیکیورٹی فورس کے ڈائریکٹر جنرل نے بھی بھارتی فوجی سے بہتر سلوک کرنے پر پاکستان کا شکریہ ادا کیا۔ فوٹو: فائل

بھارتی سیکیورٹی فورس کے ڈائریکٹر جنرل نے بھی بھارتی فوجی سے بہتر سلوک کرنے پر پاکستان کا شکریہ ادا کیا۔ فوٹو: فائل

بھارتی فوج نے بکریاں چراتے ہوئے غلطی سے مقبوضہ کشمیر میں داخل ہونے والے آزاد کشمیر کے  ایک شہری کو شہید کر دیا۔اخبارات میں اس شہری کا نام کالا خان شایع ہوا ہے ۔ اس کی لاش آزاد کشمیر حکام کے حوالے کر دی گئی۔ ایسا پہلی بار نہیں ہوا‘ اکثر سرحدی علاقوں کے شہری جانور چراتے ہوئے یا کسی اور وجہ سے غلطی سے سرحد پار کرکے بھارتی علاقے میں داخل ہو جاتے ہیں مگر بھارتی فوجی انھیں واپس کرنے کے بجائے شدید تشدد کا نشانہ بناتے  ہیں، انھیں  جیل میں ڈال دیا جاتا ہے، بعض مارے جاتے ہیں۔ اصولاً اور انسانی حوالے سے دیکھا جائے تو  غلطی سے سرحد پار کرنے والے شہریوں کے ساتھ ایسا ناروا اور ظالمانہ سلوک نہیں کیا جانا چاہیے۔

عوامی حلقوں کا کہنا ہے کہ بھارتی قید میں اب بھی درجنوں بے گناہ پاکستانی ہیں جن کے ساتھ ظالمانہ سلوک کیا جا رہا ہے‘ بھارتی حکام کو معلوم ہے کہ یہ بے گناہ ہیں مگر انھیں واپس نہیں کیا جا رہا۔ چند روز قبل بھارتی سیکیورٹی فورس کا ایک سپاہی  پاکستانی حدود میں آ گیا تو  رینجرز نے اسے گرفتار کر لیا تھا مگر پاکستانی سپاہیوں نے اسے تشدد کا نشانہ بنانے یا ہلاک کرنے کے بجائے اس کے ساتھ بہت اچھا سلوک کیا جس کا اعتراف اس نے بھی اپنے ملک واپس جاتے ہوئے ان الفاظ میں کیا ’’مجھ سے میری توقع سے زیادہ اچھا سلوک کیا گیا‘ کوئی تکلیف نہیں دی گئی مجھے خوشی ہے آج میں گھر اپنے بچوں کے پاس جا رہا ہوں‘‘۔

بھارتی سیکیورٹی فورس کے ڈائریکٹر جنرل نے بھی بھارتی فوجی سے بہتر سلوک کرنے پر پاکستان کا شکریہ ادا کیا۔ جب پاکستانی حکام غلطی سے سرحد پار کرنے والے بھارتیوں سے بہتر سلوک کر سکتے ہیں تو بھارتی حکام پاکستانی شہریوں کے ساتھ ایسا کیوں نہیں کرتے۔ دونوں ملکوں کو اس حوالے سے کوئی لائحہ عمل تیار کرنا چاہیے، جس کے تحت غلطی سے سرحد پار کرنے والوں کو اسی وقت واپس بھیجا جا سکے۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔