شہباز شریف پاکستان کے مقبول ترین لیڈر بن گئے

اے پی پی  بدھ 13 اگست 2014
72 فیصد پاکستانیوں نے طاہرالقادری کو بدترین رہنما قرار دیا ہے اور صرف 21 فیصد نے انھیں اچھا رہنما قرار دیا، پلڈاٹ فوٹو: فائل

72 فیصد پاکستانیوں نے طاہرالقادری کو بدترین رہنما قرار دیا ہے اور صرف 21 فیصد نے انھیں اچھا رہنما قرار دیا، پلڈاٹ فوٹو: فائل

اسلام آباد: پاکستانیوں کی بھاری اکثریت نے اس یقین کا اظہار کیا ہے کہ منتخب جمہوری نظام پاکستان کے لیے بہترین سسٹم ہے، مئی 2013 کے عام انتخابات مکمل طور پر شفاف ہوئے۔

پلڈاٹ کے زیراہتمام 16جولائی سے 6 اگست کے دوران ہونے والے ملک گیر سروے میں پاکستان بھر کے 3065شہریوں کی رائے حاصل کی گئی۔ سروے کے مطابق67 فیصد شہری جمہوری منتخب حکومتی نظام کو پاکستان کے لیے بہترین سسٹم تصور کرتے ہیں۔ عوامی مقبولیت کے لحاظ سے وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف 57 فیصد مثبت ریٹنگ کے ساتھ سرفہرست رہے۔ وزیراعظم نواز شریف 53 فیصد مثبت ریٹنگ میں عوام کے پسندیدہ رہنما ہیں۔

سروے کے مطابق 52 فیصد شہریوں نے پی ٹی آئی کے چیئرمین عمران خان کو ایک اچھا رہنما جب کہ 72 فیصد پاکستانیوں نے طاہرالقادری کو بدترین رہنما قرار دیا ہے اور صرف 21 فیصد نے انھیں اچھا رہنما قرار دیا۔ 63 فیصد پاکستانیوں نے اس یقین کا اظہار کیا کہ مئی2013ء کے عام انتخابات مکمل طور پر شفاف تھے جبکہ37فیصد افراد نے ان انتخابات کو کسی حد تک دھاندلی سے تعبیر کیا۔ 85فیصد پاکستانیوں نے الیکشن کمیشن کے فنکشنز میں اصلاحات لانے اور تشکیل نوکی ضرورت پر زور دیا۔

67 فیصد پاکستانیوں نے محسوس کیا کہ ستمبر2013ء میں قومی اور صوبائی حکومتوں کے قیام کے100دن مکمل ہونے پر انتخابی اصلاحات کی ضرورت تھی۔40 فیصد پاکستانیوں نے الیکشن کمیشن کے اہم ادارے پر اپنے بھرپور اعتماد کا اظہار کیا۔ 52 فیصد شہریوں نے اس بارے میں اختلاف کا اظہار کیا۔ یہ اختلاف رائے اس بات کا مظہر ہے کہ لوگ الیکشن کمیشن کے ادارہ میں اصلاحات لانے کے حامی ہیں۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔