امریکن فٹبال؛ پاکستان کی بھارت کیخلاف گولز کی سنچری

اسپورٹس ڈیسک  پير 18 اگست 2014
گرین شرٹس نے روایتی حریف کو 101-7 کے غیرمعمولی فرق سے شکست دے دی۔ فوٹو: فائل

گرین شرٹس نے روایتی حریف کو 101-7 کے غیرمعمولی فرق سے شکست دے دی۔ فوٹو: فائل

میلبورن: امریکن فٹبال(رگبی) کے ایک دوستانہ میچ میں پاکستان نے بھارت کیخلاف گولز کی سنچری بنادی، میلبورن میں کھیلے گئے میچ میں گرین شرٹس نے روایتی حریف کو 7 کے مقابلے میں 101 پوائنٹس سے عبرتناک شکست دے کر دوستی کپ اپنے نام کرلیا۔

تفصیلات کے مطابق بھارتی ٹیم کے 15 کھلاڑی انٹرنیشنل کپ کے 5 میچز میں شرکت کیلیے خصوصی طور پر آسٹریلیا پہنچے ہیں جبکہ پاکستانی اسکواڈ میزبان شہر میں مقیم تارکین وطن پر مشتمل ہے، گرین شرٹس پہلی بار آسٹریلین فٹبال لیگ کے تحت اس ایونٹ کا حصہ بنائے گئے ہیں جبکہ بلو شرٹس دوسری مرتبہ شرکت کررہے ہیں، دوستی کپ کے نام سے شیڈول کئے گئے دوستانہ میچ میں پاکستان کے کھلاڑی چھائے رہے، گرین شرٹس نے میچ کا آغاز ہی طوفانی انداز میں کرتے ہوئے پہلے ہی منٹ میں گول داغ کر پہلا پوائنٹ حاصل کرلیا۔

تین منٹ بعد دوسری بار حریف کے دفاع میں شگاف ڈالا، پھر یہ سلسلہ تیزی سے آگے بڑھا اور پہلے کوارٹر کے اختتام پر پاکستان 24 پوائنٹس حاصل کرچکا تھا جبکہ بھارت ایک بار بھی کامیابی نہ حاصل کرسکا، دوسرے کوارٹر میں گرین شرٹس نے 37 پوائنٹس حاصل کرکے اپنا مجموعہ 61 تک پہنچا دیا جبکہ بھارت صرف ایک پوائنٹ کے ساتھ ہمت ہارتا نظر آیا۔ تیسرے کوارٹر میں پاکستان کی جانب سے مزید 18گول کئے گئے جبکہ حریف کو صرف ایک موقع ملا۔

آخری کوارٹر میں گرین شرٹس نے مزید 22گول داغ کر اپنا اسکور 101 تک پہنچا دیا جبکہ بھارت صرف 7 تک محدود رہا۔ دلچسپ مقابلے کو دیکھنے کیلیے دونوں ملکوں کے سفارتکار اور مقامی کمیونٹی کی معزز شخصیات بھی موجود تھیں۔یاد رہے کہ انٹرنیشنل کپ کا انعقاد ہر 3 سال بعد کیا جاتا ہے، اس بار میلبورن میں 23 اگست تک شیڈول ایونٹ میں دفاعی چیمپئن آئرلینڈ، پاکستان، بھارت،امریکا ، کینیڈا، چین، فجی، فن لینڈ، فرانس، انڈونیشیا، انگلینڈ، جاپان، نیوزی لینڈ، نیرو، پاپوا نیوگنی،ٹونگا، جنوبی افریقہ اور سوئیڈن کی ٹیمیں شریک ہیں۔

مقابلوں کے باقاعدہ آغاز سے قبل روایتی حریفوں کا دوستانہ میچ خاصی توجہ کا مرکزبنا۔ آسٹریلین فٹبال لیگ کے کوآرڈینیٹر کاشف نے کہا کہ دوستی کپ کے نام سے پاک بھارت میچ دونوں ملکوں کے تارکین وطن کو قریب لانے کا ایک ذریعہ تھا، انٹرنیشنل کپ کی بدولت مختلف ثقافتوں سے تعلق رکھنے والے کھلاڑیوں میں ہم آہنگی کے فروغ میں بھی مدد ملتی ہے، امید ہے کہ اس بار بھی ایونٹ کامیابی سے ہمکنار ہوگا۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔