فیصل آباد میں پیش آنے والے واقعے سے مذاکرات کے راستے بھی بند ہورہے ہیں، شیخ رشید

ویب ڈیسک  پير 8 دسمبر 2014
جب کسی تحریک میں خون شامل ہوجائے تو پھر حکومتیں باقی نہیں رہتیں، شیخ رشید۔ فوٹو: فائل

جب کسی تحریک میں خون شامل ہوجائے تو پھر حکومتیں باقی نہیں رہتیں، شیخ رشید۔ فوٹو: فائل

لاہور: عوامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشید احمد کہتے ہیں کہ فیصل آباد میں پیش آنے والے واقعے سے مذاکرات کی راہیں دھندلا گئی ہیں۔ 

ایکسپریس نیوز سے خصوصی بات کرتے ہوئے شیخ رشید کا کہنا تھا کہ جب کسی تحریک میں خون شامل ہوجائے تو پھر حکومتیں باقی نہیں رہتیں۔ نواز شریف کی ٹیم میں ناقص اور نااہل وزرا و مشیران پر مشتمل ہے اگر حکومت کے وزیروں اور مشیروں میں عقل اوراہلیت ہوتی تو وہ اپنے غنڈوں کو کبھی بھی سڑک پر نہ لاتے اور شہر میں پر امن احتجاج ہوتا۔ حکومت کی جانب سے فیصل آباد میں لگائی گئی آگ کی شدت اب کراچی اور لاہور میں بھی محسوس ہوگی کیونکہ جب لوگوں کی آواز کو طاقت سے بدل دیا جاتا ہے تو پھر وہ آواز سارے نظام کو بدل دیتی ہے۔

شیخ رشید کا کہنا تھا کہ اپوزیشن کا کردار احتجاج جبکہ حکومت کا کام مصلحت پسندی ہوتا ہے، فیصل آباد میں پیش آنے والے واقعے سے ایسا نظر آتا ہے کہ اب مذاکرات کا راستہ دھندلا گیا ہے کیونکہ حکمرانوں نے ابھی تک اپنی انا اور فرعونیت کو ختم نہیں کیا۔ این اے 122 میں دھاندلی ثابت ہوگئی تو اسمبلی کا اخلاقی جواز نہیں رہے گا۔ سنگین غداری کیس سے متعلق زاہد حامد کی درخواست سے ظاہر ہوتا ہے کہ حکومت اور فوج کے درمیان معاملات ٹھیک نہیں ہوئے۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔