امریکا میں خاتون کو پڑوسی کا کتا چوری کرکے ہلاک کرنا مہنگا پڑ گیا

ویب ڈیسک  ہفتہ 27 دسمبر 2014
خاتون نے گزشتہ سال پڑوسی کا کتا چوری کرکے اسے انجیکشن کے ذریعے ہلاک کردیا تھا،
فوٹو؛ فوکس نیوز

خاتون نے گزشتہ سال پڑوسی کا کتا چوری کرکے اسے انجیکشن کے ذریعے ہلاک کردیا تھا، فوٹو؛ فوکس نیوز

پیٹرزبرگ: جہاں قانونی کی حکمرانی ہو وہاں معمولی چوری بھی بڑی اہمیت رکھتی ہے اور ایسا ہی کچھ ہوا امریکہ میں جہاں ایک خاتون کو پڑوسی کا کتا چورکرکے اسے ہلاک کرنا اتنا مہنگا پڑگیا کہ عدالت نے اسے گھر میں نظر بند کرنے کا حکم دے دیا۔

امریکی اخبار کے مطابق پیٹرز برگ کے علاقے الیگھنی کاؤنٹی کی رہائشی خاتون گیسلی پیرس پر اپنے پڑوسی کا کتا چرانے اور اسے بیماری کے باعث انجیکشن کے ذریعے ہلا ک کرنے کا مقدمہ گزشتہ ایک سال سے زیر سماعت تھا جس میں عدالت نے دونوں فریقین کے دلائل سننے کے بعد پیرس کو چوری کرنے اور جانوروں کے ساتھ ظلم کرنے کے جرم میں مجرم قراردیتے ہوئے گھر میں نظر بند کرنے کا حکم دے دیا۔ اخبار کے مطابق گزشتہ سال پیرس نے کینسر کے مریض اپنے پڑوسی مارک بوہلر کا’’ تھور‘‘ نامی کتا چرا یا تھا جس پر پڑوسی نے کتے کی گمشدگی کا مقدمہ عدالت میں دائر کردیا اور عدالت میں بیان دیتے ہوئے ملزمہ کا کہنا تھا کہ اسے کتا ایک پہاڑی سے ملا جس کے بعد وہ اسے گھر لے آئی اور اس کی دیکھ بھال کرتی رہی لیکن کتا چونکہ بیمار تھا اور اس کی بیماری جب شدت اختیار کرگئی تو اسے ’یوتھانائزڈ‘ کے ذریعے ہلاک کیا گیا۔

عدالت میں دلائل دیتے ہوئے سرکاری وکیل کا کہنا تھا کہ  پیرس کو بتا دیا گیا تھا کہ کتا کس کا ہے لیکن اس کے باوجود اس نے مالک سے رابطہ نہیں کیا جس پر عدالت نے اسے  چوری اور جانور سے بدسلوکی کا مجرم قراردیتے ہوئے گھر میں نظر بند کرنے کا حکم صادر کردیا جبکہ ملز مہ کے وکیل کا کہنا ہے کہ آئندہ سماعت میں ان کی سزا کے بارے میں فیصلہ سنایا جائے گا جو کم از کم 10 سال تک ہوسکتی ہے۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔